31

عبدالقوی کوضمانت پررہائی کا”پروانہ“ مل گیا

ملتان(سٹیٹ ویوز)پاکستانی ماڈل قندیل بلوچ قتل کیس میں گرفتار ملزم مفتی عبدالقوی کو بالاخرضمانت پر رہائی کا” پروانہ“ مل گیا، سیشن کورٹ نے دو لاکھ مچلکوں کے عوض مفتی کی ضمانت بعد ازگرفتاری منظور کرلی۔

ماڈل قندیل بلوچ قتل کیس میں اعانت قتل کے الزام میں گرفتار ملزم مفتی عبدالقوی کو بالاخر 27 دنوں کے بعد رہائی کا پروانہ مل گیا۔ مفتی عبدالقوی کو 19 اکتوبر کو عبوری ضمانت کی درخواست مسترد ہونے پر عدالت سے گرفتار کرلیا گیا تھا جو جسمانی ریمانڈ کے بعد جوڈیشل ریمانڈ پر تھانے اور جیل میں قید رہے ۔

ایک روز قبل ہی مفتی عبدالقوی کومزید جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجا گیا تھا تاہم مفتی قوی کے وکلا کی جانب سے دائر کی جانیوالے درخواست ضمانت منظور کرتے ہوئے سیشن جج چوہدری امیر محمد خان نے ملزم کو دولاکھ روپے کے مچلکوں پر رہا کرنے کا حکم دیدیا ہے۔

مفتی عبدالقوی نے مقتولہ قندیل بلوچ نے مفتی عبدالقوی کی ٹوپی پہن کراس کے ہمراہ سیلفیاں بنوائی تھیں ۔ تاہم قندیل بلوچ غیرت کے نام پرقتل ہوئی تو اس کے بعد اعانت قتل کے الزام میں مفتی عبدالقوی بھی مقدمے میں ملزم نامزد ہوگئے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں