22

اغوا ہونے والے انجینئر بازیاب

راولپنڈی (سٹیٹ ویوز) پاک فوج نے افغانستان میں اغواء ہونے والے انجینئر ملک فیض کو باحفاظت بازیاب کراکے ان کے گھر راولپنڈی منتقل کردیا ہے جس پر اہل خانہ خوشی سے نہال ہیں۔تفصیلات کے مطابق پاک آرمی نے 105 دن سے لاپتہ پاکستانی انجینیئر ملک فیض کو بازیاب کرالیا ہے جس کے بعد پاکستانی انجینیئر راولپنڈی میں واقع اپنے گھر پہنچ گئے ہیں

جہاں اس وقت جشن کا سا سماں ہے۔مغوی انجیبئر ملک فیض کے صاحبزادے نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ والد صاحب 105 دن بعد باخیریت گھر پہنچ گئے ہیں جنہیں گزشتہ پاک فوج نے ایک کارروائی کے دوران بازیاب کرایا تھا اور جن کی رہائی کے لیے 10 لاکھ ڈالر تاوان طلب کیا گیا تھا۔

اس موقع پر انجینئرملک فیض نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ مجھے رواں سال اگست میں کالعدم جماعت الاحرار کے دہشت گردوں نے اغواء کیا تھا اور رہائی کے عوض 10 لاکھ ڈالر تاوان طلب کیا تھا۔انہوں نے مزید بتایا کہ اغواء کاروں نے 105 دن تک بد ترین تشدد کا نشانہ بنایا

اور تشدد کی ویڈیو سوشل میڈیا پر بھی جاری کی تاکہ گھر والے خوف زدہ ہوکر جلد از جلد تاوان کی رقم کا بندوبست کریں۔پاکستانی انجینئر ملک فیض نے اپنی بازیابی پر پاک فوج کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ آج مجھے پاک آرمی کی وجہ سے نئی زندگی ملی ہے جس پر میں اور میرے اہل خانہ آرمی چیف قمر باجوہ اور ایک ایک سپاہی کے شکر گذار ہیں۔

یاد رہے ایئرپورٹ ہاؤسنگ سوسائٹی سے تعلق رکھنے والے ملک فیض کو طور خم جلال آباد روڈ پروجیکٹ کی تعمیرکی دوران اغواء کیا گیا تھا جہاں وہ ایک نجی کمپنی میں بہ طور انجینیئر فرائض انجام دے رہے تھے اور پروجیکٹ کی تکمیل میں مشغول تھے۔