17

لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے وفاقی حکومت اورچیئرمین پیمراکونوٹس جاری

لاہور (سٹیٹ ویوز) لاہور ہائیکورٹ نے ٹی وی چینلزکی نشریات روکنے کےخلاف درخواست پروفاقی حکومت اورچیئرمین پیمراکونوٹس جاری کر دیا،تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ میں ٹی وی چینلزکی نشریات روکنے کےخلاف درخواست کی سماعت ہوئی ،جسٹس عائشہ اے ملک نے درخواست پرسماعت کی،

جس میں وفاقی حکومت اورچیئرمین پیمراکوفریق بنایاگیا،درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کے رو برو موقف پیش کیا کہ ٹی وی نشریات روکناآرٹیکل 19 اے کی خلاف ورزی ہے،عدالت سے استدعا ہے کہ ذمہ داروں کےخلاف قانونی کارروائی کاحکم دیا جائے۔

عدالت نے دلائل سننے کے بعد وفاقی حکومت اور چیئرمین پیمرا کو نوٹس جاری کردیا۔ واضح رہے کہ پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی(پیمرا)نے فیض آباد آپریشن کی لائیو کوریج سے میڈیا کو روک دیا‘ تمام نیوز چینلز کو آف ایئر کرنے کے حکم کے بعد ملک بھر میں سوشل میڈیا

‘فیس بک، ٹوئٹر اور یوٹیوب کو بھی انٹرنیٹ براؤزر پربلاک کر دیاگیا۔ پیمرا نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ میڈیا کوڈ آف کنڈکٹ 2015 کے تحت لائیو آپریشن کی کوریج بند کی جائے ‘قانون نافذکرنے والے اداروں کی پوزیشنزکو لائیونہ دکھایاجائے‘ میڈیا ہاؤسز اپنے اسٹاف کی سکیورٹی یقینی بنائیں ‘

سکیورٹی فورسز کے آپریشن کے دوران ان کی لائیو کوریج سے آپریشن کرنے میں مشکلات کا سامنا ہے۔پیمرا نے کہا کہ سیکیورٹی فورسز کے آپریشن کے دوران ان کی حکمت عملی کو لائیو نہیں دکھا سکتے ہیں۔ اس سے سکیورٹی فورسز کی زندگیوں کو خطرات لاحق ہو گئے ہیں۔

میڈیا کو اجازت دی گئی کہ رپورٹنگ کی جا سکتی ہے لیکن سکیورٹی فورسز کی لائیو پوزیشنز کو نہ دکھایا جائے ۔ادھر پاکستان براڈ کاسٹرز ایسوسی ایشن نے حکومت کی جانب سے نیوز چینلز کی یک طرفہ بندش کی سخت مذمت کی ہے۔