آرمی ویلفیئر ٹرسٹ نےبین الاقوامی ریئل اسٹیٹ کمپنی”شن”کیساتھ ہاتھ ملا لئے

سلام آباد(سٹیٹ ویوز/سٹاف رپورٹر) آرمی ویلفیئر ٹرسٹ ملکی تاریخ میں پہلی بارانٹرنیشنل رئیل اسٹیٹ ڈویلپمنٹ کمپنی ”شِن“ کے ساتھ جوائنٹ وینچر کرے گاجو پاکستان کی معیشت کے لئے ایک بہترین قدم ہے۔کمپنی ترجمان فیصل بن ناصر کے مطابق آرمی ویلفیئر ٹرسٹ کے ساتھ معاہدے کی تقریب کا انعقاد رواں ماہ اسلام آباد میں ہو گا،اے ڈبلیو ٹی کا سنگجانی پراجیکٹ سی پیک روٹ پرواقع ہےجبکہ یہ منصوبہ نو تعمیر شدہ اسلام آباد انٹرنیشنل ایئر پورٹ سے صرف دس منٹ کی مسافت اور موٹر وے پر اپنے منفرد انٹرچینج روٹ کے باعث بیرونی اور پاکستانی سرمایہ کاروں کی خاص توجہ حاصل کر چکا ہے۔

انکا مزید کہنا تھا اے ڈبلیو ٹی اورشن کی مشترکہ سرمایہ کاری سے رئیل اسٹیٹ سیکٹر کو ترقی ملے گی۔لاہور اور اسلام آباد میں منصوبے پرمشترکہ منصوبہ بندی معاہدے کا مقصد پاکستان میں بیرونی سرمایہ کاری کے حجم کو فروغ دینا ہے، سی پیک کے ثمرات کی بدولت رئیل اسٹیٹ سیکٹر کی ترقی سے عام شہری بھی اس سے مستفید ہو گا اورآرمی ویلفیئر ٹرسٹ کے شن کے ساتھ ملکی تاریخ کے منفرد منصوبے میں بھاری سرمایہ کاری کی جائے گی۔

فیصل بن ناصر کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان میں دہشت گردی کے عفریت پر قابو پانے کے بعد بیرونی سرمایہ کاروں کی جانب سے بھاری سرمایہ کاری کے مواقع پیدا ہونا شروع ہوگئے ہیں،جس کی موجودہ مثال ائے ڈبلیو ٹی اور شن کا موجودہ قدم ہے جو پاکستان کی معیشت کے لئے بہترین اقدام سے کم نہیں، پاکستان دنیا کی توجہ کا مرکز ہے کیونکہ سی پیک منصوبہ پاکستان کو دنیا کی تجارت کے لئے سونے کی چڑیا گردانتا ہے اور ملک کے پریمیئر رئیل اسٹیٹ ادارے ائے ڈبلیو ٹی اورکا سنگجانی پراجیکٹ سی پیک روٹ پر عین واقع ہے جبکہ یہ منصوبہ نو تعمیر شدہ اسلام آباد انٹرنیشنل ایئر پورٹ سے چندمنٹ کی مسافت اور موٹر وے پر اپنے منفرد انٹرچینج روٹ کے باعث بیرونی اور پاکستانی سرمایہ کاروں کی خاص توجہ حاصل کر گیا ہے، جس کی بدولت پاک چین تجارتی راہداری پرآئندہ دنوں میں بھاری سرمایہ کاری کے مواقع پیدا ہو گئے ہیں۔

عسکری ویلفیئر کے ادارے اے ڈبلیو ٹی اور انٹرنیشنل کمپنی کے باہمی شراکتی پراجیکٹ میں آئندہ دنوں میں عام شہریوں کے لئے بہترین سہولیات سمیت آسان شرائط پر بہترین طرزِ زندگی کے حصول کے لئے منفرد سکیمیں بھی شروع کرنے کا عندیہ دیا گیا ہے جس کا مقصد پاکستان میں چھت سب کے لئے حصول کو آسان بنانا ہے اس معاہدے کی تقریب کے فوری بعد اس کے ثمرات عام شہری تک پہنچنا شروع ہو جائیں گے۔ واضع رہے کہ اے ڈبلیو ٹی اور شن انٹرنیشنل کے درمیان معاہدے پر رواں سال میں نہ صرف رہائشی بلکہ کمرشل پراجیکٹس کو تکمیل کیا جائے گا۔