سردیوں میں یہ غذائیں مت کھائیں ورنہ آپ کی جان کو خطرہ لاحق ہوسکتا ہے

لاہور (سٹیٹ ویوز/نیوز ڈیسک) موسم سرما بھرپور آب و تاب کے ساتھ جاری و ساری ہے موسم سرما کے اپنے ہی رنگ ہیں اور اس رنگ میں ہی کئی قسم کے غذائیں اورپکوان بھی شامل ہے۔لوگوں کا سردیوں میں کھانا پینے کا رجحان کافی بڑھ جاتا ہے، گرمیوں کے مقابلے میں سردیوں میں زیادہ کھانے پینے کا رجحان رہتا ہے

لیکن اس کا ہرگز یہ مطلب نہیں کہ اس میں ہر غذا یا پکوان کو شامل کرلیا جائے۔ماہرین غذائیت اس موسم میں خشک میوہ جات،مخصوص پھلوں اور سبز پتوں والی سبزیوں کا زیادہ کھانا ہی بہتر تصور کرتے ہیں۔تاہم ماہرین کے مطابق کچھ غذائیں

ایسی ہیں جنھیں اس موسم میں کم سے کم استعمال کرنا ہی بہتر ہوتا ہے، جن کی بارے میں ھم آپ کو بتانے جارہے ہیں۔موسم سرما میں ان چیزوں سے احتیا ط کریں۔ تلی ہوئی غذائیں:ڈیپ فرائی اشیاء غذائی ٹرانس فیٹ سے بھرپور ہوتی ہیں اور غذائی فائدہ جسم کو پہنچائے بغیر ہی کیلوریز کی مجموعی مقدار کو بڑھا دیتی ہیں

اس طرح کی غذائیں بدہضمی یا معدے کے دیگر مسائل کا باعث بھی بن سکتی ہیں۔ ٹھنڈے یا گرم مشروبات:ہر شخص اس موسم میں چائے کافی و دیگر گرم مشروبات کا استعمال پسند کرتا ہے مگر ان مشروبات میں موجود چربی اور کیفین کی مقدار کو ذہن میں رکھنے کی اشد ضرورت ہے

یہ مشروبات جسم میں پانی کی کمی کا باعث بن سکتے ہیں، تو ان سے لطف اندوز ضرور ہوں مگر بہت زیادہ پینے سے گریز کریں اور کوشش کریں کہ پانی کو ہی ترجیح دی جائے ۔ انڈےاورسرخ گوشت:یہ دونوں چیزیں پروٹین کے حصول کا بہترین ذریعہ ہیں، مگر بہت زیادہ پروٹین گلے میں مواد کے اجتماع کا باعث بن سکتا ہے

خاص طور پرزیادہ چربی والا گوشت مسئلے کا باعث بن سکتا ہے جبکہ مچھلی اور مرغی نسبتاً بہترچوائس ہیں۔ دودھ سے بنی مصنوعات:اگرچہ دودھ کو مکمل غذا مانا جاتا ہے مگر موسم سرما میں بہتر یہی ہے کہ اس کا استعمال کم کردینا چاہئے، ماہرین کے مطابق دودھ بلغم کا باعث بنتا ہے، جو گلے میں خراش کو بڑھانے کا بھی باعث بنتا ہے۔

چینی:طبی ماہرین کا ماننا ہے کہ موسم سرما میں زیادہ میٹھا کھانا جسمانی دفاعی نظام کو کمزور کرسکتا ہے، جو مختلف امراض کے لیے جسم کو آسان شکار بنا دیتا ہے۔ دوسرے موسم کے پھل:کبھی بھی ایسے پھلوں کا استعمال ہرگز نہ کریں جو کسی اور موسم کےہو کیونکہ وہ تازہ نہیں ہوتےاور بیماری یا طبی مسائل کا باعث بن سکتےہیں، اس کی جگہ زیادہ ترش پھل جیسے مالٹے، کینو وغیرہ کا استعمال کریں جو جسم کے میٹابولزم کو بہتر کرتے ہیں۔