بچی کی لاش دیکھتےہی ڈی پی او نے گاڑی سے نیچے اترنے سے انکار کیوں کیا؟وجہ سامنے آگئی

قصور(سٹیٹ ویوز)کمسن زینب کے بڑے بھائی ابوذر امین نے میڈیا کو بتایا کہ جب زینب کی لاش کچرے کے دھیر پر ملی تو ڈی پی او قصور ذوالفقار علی سرکاری جیپ پر وہاں آئے اور گاڑی سے نیچے اترنے سے یہ کہہ کر انکار کر دیا کہ وہاں سے بدبو آ رہی ہے۔

اور جب اس دلخراش واقعہ پر احتجاج اور انصاف مانگنے سڑکوں پر آئے تو نہتے مظاہرین پر پولیس نے سیدھی فائرنگ کر کے بربریت کی انتہاء کردی ۔

معصوم زینب! کہنے کو بہت کچھ ہے، لکھنے کو مگر کچھ نہیں!تم جاتے جاتے کس طرح اس معاشرے کی سنگ دلی اور بے حسی کو عیاں کرگئی۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومتی ادارے ایسے واقعات کی روک تھام کے لئے اپنا موثرکردار ادا کریں ، اور کمسن زینب کے درندہ صفت قاتل کو گرفتار کرکے عبرتناک سزادی جائے تاکہ آئندہ کوئی ایسا جرم کرنے کا سوچ بھی نہ سکے۔