روزانہ ایک کیلا کھائیں اور اپنی زندگی بچائیں۔۔۔!

واشنگٹن(نیوز ڈیسک)کیلا ایک ایسا لذیز پھل ہے جو بچوں بڑوں سب کو پسند ہے اور خوش قسمتی سے یہ سال بھر ارزاں نرخوں پر دستیاب بھی رہتا ہے۔ اگر آپ پہلے ہی کیلے کے شوقین ہیں تو بہت اچھی بات ہے لیکن اگر ایسا نہیں ہے تو آج سے ہی اسے اپنی خوراک کا باقاعدہ حصہ بنا لیجئے۔

اس کی وجہ یہ ہے کہ کیلا قدرت کا ایسا تحفہ ہے جو آپ کو انتہائی مہلک بیماریوں سے قدرتی طریقے کے ساتھ زبردست تحفظ فراہم کر دیتا ہے۔ اخبار ’دی انڈیپیڈنٹ‘ کے مطابق یونیورسٹی آف الباما کے سائنسدانوں کی تازہ ترین تحقیق میں معلوم ہوا ہے کہ کیلے میں پائی جانے والی پوٹاشیم کی وافر مقدار خون کی شریانوں میں رکاوٹ کا مسئلہ پیدا نہیں ہونے دیتی جبکہ اس کی وجہ سے شریانوں کے تنگ ہونے یا ان کی اندورنی سطح کے سخت ہونے کا مسئلہ بھی پیش نہیں آتا۔

تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ کیلے کی ان خوبیوں کی وجہ سے یہ انسان کو دل کے دورے اور فالج جیسی خطرناک بیماریوں سے محفوظ رکھتا ہے۔غذائی ماہرین نے یہ بھی بتایا ہے کہ کیلے ضرور کھانے چائیے لیکن اعتدال کے ساتھ کیونکہ بہت زیادہ مقدار میں کھا لینے سے پیٹ درد، متلی اوراسہال جیسے مسائل لاحق ہوسکتے ہیں۔

ماہرین بتاتے ہیں کہ دن بھر میں ہمیں تقریباً3500ملی گرام پوٹاشیم کی ضرورت ہوتی ہے، جو تقریباً آٹھ کیلوں سے حاصل ہو سکتی ہے۔اس کا یہ مطلب نہیں ہے کہ پوٹاشیم کی تمام ضرورت کیلے سے ہی پوری کی جائے کیونکہ ہمیں دیگر غذاؤں سے بھی اس کی کچھ مقدار حاصل ہوجاتی ہے۔

کیلے کے علاوہ آلو،سلاد ،خشک میوہ جات ،مچھلی اور انڈے سے بھی پوٹاشیم حاصل ہوتی ہے، لہٰذا ایک یا دو کیلے بھی باقاعدگی سے کھاتے رہیں تو کافی ہیں۔