جموں کشمیر لبریشن فرنٹ یورپ کامقبول بٹ کو زبردست خراج تحسین

برسلز(سٹیٹ ویوز) برسلز جموں کشمیر لبریشن فرنٹ یورپ نے ایک مرتبہ پھر بھارتی حکومت سے مطالبہ کیاہے کہ شہید کشمیر مقبول بٹ کا جسد خاکی ان کے اہل خانہ اور اہل وطن کے حوالے کیاجائے.

مقبول بٹ شهید کی 34وں برسی کے موقع پر یورپ کے دارلحکومت برسلز میں ایک احتجاجی مظاهرے میں کہاگیا ہے کہ کشمیری قوم مقبول بٹ شهید کی میت کی منتظر ہے.

ان خیالات کا اظہار جموں کشمیر لبریشن فرنٹ یورپ کے صدر تنویر احمد چوهدری نےکیا. ان کا کہنا تھا کہ پوری دنیا میں کشمیری عوام 11فروری کو اپنے حق خود اختیاری ،آزادی اور ایک متحده کشمیر کے حصول کے عزم کا اعادہ کرتے ہیں۔
بھارت نے 11فروری 1984کو مقبول بٹ کے عدالتی قتل کے بعد بھارتی حکمرانوں نے ان کی میت ان کے ورثا اور اہل وطن کے حوالے کرنے کے بجائے تہاڑ جیل کے ایک کونے میں دفنادی ہے اور جموں وکشمیر کے مسئلے کے حل کے سلسلے میں ٹال مٹول کے ساتھ ہی باربار کے مطالبات کے باوجود مقبول بٹ کی میت بھی ان کے ورثا کے حوالے کرنے سے گریزاں ہے۔

مقررین نے کہا کہ ان کو پھانسی دیے جانے کے بعد سے ایک خالی قبر ان کے جسد خاکی کو دفنانے کیلئے منتظر ہےتاکہ ان کی میت کو دھرتی کے بہادر سپوت کے شایان شان طریقے سے دفنایاجاسکے۔ کشمیر کے دونوں اطراف کے عوام مقبول بٹ کو اپنا ہیرو تصور کرتے ہیں وہ ایک قومی ہیرو ہیں اور ان کی شہادت کشمیری عوام کے اس عزم کی عکاس ہے کہ وہ ایک متحدہ کشمیر میں اپنی قسمت کے خود مالک بننااور اپنی منزل کا خود تعین کرنا چاہتے ہیں۔

مظاہرے سے تنویر احمد چوهدری، شبیر جرال، مسعود میر، نسیم اقبال ایڈووکیٹ، مشتاق دیوان، سردار الطاف، ظہیر زاہد، حافظ مظہر اقبال نعیمی، امجد مجید ،اشفاق قمر، نقاش مشتاق، سردار محمود، ڈاکٹر اشتیاق، ظفر اقبال، علی راجه، عدنان، مزمل حق عادل، خان حبیب، امجد خان، مقصود ، یوسف بهٹی, علی رضا، خالد جوشی، ذاہد اقبال، اور دیگر نے خطاب کیا.