ڈاکٹر جمعہ خان نے ناراض بلوچوں سےقوم کی خاطربڑامطالبہ کردیا

ماسکو/ کوئٹہ (اشتیاق ہمدانی /سٹیٹ ویوز/ بیورو رپورٹ) ڈاکٹر جمعہ خان مری بانی اور چیف کوآرڈنیٹر اوورسیز پاکستانی بلوچ یونٹی (او پی بی یو) نے ماسکو سے کوہلو (بلوچستان) میں ایک بڑے اجتماع سے ٹیلی فونک خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ گوادر بندرگاہ اور سی پیک کی طرح کے منصوبوں کا آغاز بلوچستان کی تقدیر بدل دے گا. اور وہ تمام لوگ جنہوں نے ان منصوبوں کی مخالفت کی ہے وہ نہ صرف پاکستان کے دشمن بلکہ بلوچستان کے دشمن ہیں. انہوں نے تمام بلوچوں کو اپنے ہتھیار ڈالنے اور بلوچستان کے بہتر بنانے کے لئے اور تعمیر و ترقی کے جاری منصوبوں میں حصہ لینے کا مطالبہ کیا.

4 اپریل کو کوہلو (بلوچستان) میں منعقد ہونے والے ایک بہت بڑے اجتماع نے نام نہاد بلوچ علیحدگی پسند تحریک سے اظہار بیزاری کرنے اور تحریک کو خیر آباد کہنےاور پاکستان کے قومی دھارے پاکستان میں شامل ہونے کے ڈاکٹر جمعہ خان مری کے فیصلہ کا بھرپور خیر مقدم کیا.

اس اجتماع کا آغاز ریلی کی شکل میں ہوا جو بینک چوک کوہلو سے شروع ہوئی جس میں لوگوں کی بڑی تعداد نے ڈاکٹر جمعہ خان مری کے استقبال کے لیے خوش آمدید کے بنیر اٹھائے ہوئے تھے. اس کےعلاوہ، اس ریلی میں کئی دیگر قبائلی بزرگوں نے بھی شرکت کی. بہترین حب الوطنی کے جذبہ سے سرشعار ڈاکٹر جمعہ خان مری اور کئی دیگرافراد نے بھی خطاب کیا، جن میں وڈیرہ راب نواز، وڈیرہ غازی خان، میر شیر باز مری، وڈیرہ میر گل سنجریارنی مری، سید ناظم شاہ، وڈیرہ بویرغ مری، عمر فاروق اور میر زرک خان شامل تھے.