بھارتی آرمی چیف نے کشمیری جوانوں کے سامنے گھٹنےٹیک دیئے، بھارت میں ہلچل مچ گئی

سرینگر(سٹیٹ ویوز) بھارتی آرمی چیف جنرل بپن راوت نے اعتراف کیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج اپنے مقصد میں کامیاب نہیں ہو سکتی، وادی کے حالات بہتر کرنے کا طریقہ صرف امن ہی ہے، مجاہدین بھی اپنا مقصد حاصل نہیں کر سکتے۔مقبوضہ کشمیر میں لائٹ انفینٹری کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وادی کے انتہا پسند نوجوانوں کو جلد احساس ہو جائے گا کہ بندوق کسی مسئلے کا حل نہیں۔

یہ کہنا غلط ہے کہ وادی میں صورت حال قابو سے باہر ہو گئی ہے۔ یہ صورت حال بھی اتنی خراب نہیں ہوئی۔انہوں نے مزید کہا ہمیں مل کر امن کے لیے کوئی راستہ تلاش کرنا ہو گا اور ہم اس میں کامیاب ہو جائیں گے ۔ اس کے لیے ہم کو مل کر بیٹھنا، کام کرنا اور محنت کرنا ہو گی۔

بھارتی آرمی چیف نے ساتھ یہ بھی دعویٰ کر دیا کہ وادی کے زیادہ تر لوگ امن چاہتے ہیں اور ان کا یقین ہے کہ وہ بھارتی ہیں کیونکہ کشمیریات کا تصور واپس لانے کی ضرورت ہے۔یاد رہے برہان وہانی کی شہادت کے بعد کشمیر میں آزادی کی تحریک زور پکڑ چکی ہے اور بھارتی فوج سے اب یہ سب برداش نہیں ہو رہا اور وہ نہتے کشمیریوں پر گولیاں برسا رہی ہے۔