کیا’’پاکستان واقعی مدینہ ثانی ہے ؟؟سول پاک کی قائداعظم کو بشارت

لاہور (سٹیٹ ویوز)انسٹیٹیوٹ آف آل انٹیلیجنٹس لائف کے بانی ڈاکٹر ایلن قیصرنے اپنے ماضی کو یاد کرتے ہوئے قائد اعظم محمد علی جناح رحمۃ اللہ علیہ کا ایک واقعہ نقل کیا ۔ انہوں نے کہا کہجب 1934ءمیں قائداعظم محمد علی جناحؒ لندن میں تھے ان دنوں کا واقعہ ہے اوربرصغیر واپسی پرقائد اعظم نے اپنے سب سے قریبی دوست علامہ شبیر احمد عثمانی کو سنایا ۔

علامہ شبیر احمد عثمانی نے قائد سے پوچھا کہ ہم سب آپ کو واپس لانے کی کوشش کر رہے تھے لیکن آپ نہیں مانے اورآج آپ وطن واپس آگئے، ہم بہت خوش ہیں لیکن بتایا جائے کہ آپ کس کے کہنے پرواپس آئے ؟کیاعلامہ اقبال نے آپ کی طرف کوئی شعرلکھ کر بھیجے جس کی وجہ سے آپ واپس تشریف لائے یا یا کسی اور نےآپ کوبلایا کیونکہ ہم سب آپ کو لانے کی کوشش کررہے تھے ۔

قائداعظم محمد علی جناح نے جواب دیاکہ ایسی بات نہیں جیسی آپ سوچ رہے ہیں میں آپ کو بتاؤں گا حقیقت میں ہواکیا ہے لیکن ایک شرط پر کہ جب تک میں زندہ ہوں آپ کسی کو نہیں بتائیں گے۔ علامہ شبیر احمد عثمانی صاحب نے کہا ٹھیک ہے۔ قائداعظم نے بتایا جب میں لندن میں تھا ،تو ایک رات کو میرا پلنگ ہلنے لگا ، میں جاگ گیا تھا، ادھر اُدھر دیکھا کہ پلنگ ایسے کیوں ہل رہا ہے لیکن کچھ نظرنہیں آیا نہ ہی سمجھ آئی کہ ایسا کیوں ہوا۔

میں پھر سو گیا کہ اچانک دوبارہ پلنگ ہلنا شروع ہوگیا۔ اتنے زور سے کہ میں سوچ رہا تھا کہ زلزلہ آگیا، میں ہڑبڑا کر اُٹھ گیااور اٹھتے ہی باہر کی جانب بھاگ نکلا۔ گھر سے باہر جھانک کر دیکھا تو باہرکوئی بھی شخص موجود نہیں تھانہ ہی باہر نکلتے لوگ نظرآئے ۔

سردیوں کی رات تھی تیسری مرتبہ پھر آ کرسوگیا۔ کہ اچانک ایک بار پھرزلزلے کی صورت میں میرا پلنگ ہلنے لگا اور میری آنکھ کھل گئی کہ کیا دیکھتا ہوں کہ کمرے میں ایک حسین وجمیل شخصیت میرے سامنے کھڑی تھیں اورپورا کمرہ روشن ہوگیا ۔قائد اعظم فرماتے ہیں کہ میں نے انگریزی زبان میں پوچھا کہ ’’’آپ کون‘ ہیں.. تو انگریزی میں ہی جواب ملا کہ میں ’تمہارا نبی ﷺ ہوں .

قائد اعظم ایک دم ہاتھ باندھ کر کھڑے ہو گئےاور کہا کہ میں’’’حضور آپ کیلئے کیا کر سکتا ہوں‘‘ ‘۔’آپ ﷺ نے حکم دیتے ہوئے فرمایا کہ تم فوری واپس برصغیر جاؤ ،وہاں کے مسلمانوں کو تمہاری ضرورت ہے اور آزادی کی جدو جہد کی سربراہی کرو میں تمہارے ساتھ ہوں تم اللہ کی مدد سے کامیاب ہو گے ۔یہ ظاہری طور پر ایسا معاملہ تھا کہ پھر مجھےواپس برصغیر آنے کا حوصلہ ملا اورانشاء اللہ ہماری کامیابی یقینی ہے.