Barrister sultan

مسعود خان کو آزادکشمیر کاصدر بنانے کی اندرونی کہانی منظر عام پر آ گئی

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،سٹیٹ ویوز) آزادکشمیر کے مسعود خان کوصدر بنانے کی اندرونی کہانی منظر عام پر آ گئی ہے، تحریک انصاف آزادکشمیر کے صدر بیرسٹر سلطان محمود نے تہلکہ خیز انکشافات کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت پاکستان کو کشمیریوں پر اعتماد نہیں جس کی وجہ سے دفتر خارجہ کا ملازم ہم پر صدر بٹھا دیا ہے جو انتہائی تشویش ناک بات ہے.

ان خیالات کا اظہار بیرسٹر سلطان محمود نے اسلام آباد بار ایسوسی ایشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ آج ہمیں محسوس ہو رہا ہے کہ تقسیم کشمیر کی تیاریاں مکمل کر لی گئیں ہیں جس کا پہلا اشارہ مسعود خان کو صدر بنانے کی صورت میں ملا جبکہ دوسرا اشارہ گلگت کو صوبہ بنائے جانے کی خبروں سے مل رہا ہے.

ان کا کہنا تھا کہ کشمیر تقسیم کشمیر کی کسی سازش کو کامیاب نہیں ہونے دینگے، اگر ایسا ہی کرنا تھا تو ستر سال پہلے کر لیتے آج اس کی کیا ضرورت ہے.

انہوں نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں اس وقت بہت بڑی تحریک چل رہی ہے، ستر سال سے کشمیر کے عوام قربانیاں دے رہے ہیں، لاکھوں کشمیری جان کی قربانی دے چکے ہیں،

سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ برہان وانی کی شہادت کے بعد مقامی کشمیریوں نے تحریک چلائی، پہلے الزام لگایا جاتا تھا کہ مسلح جدوجہد پاکستان کی مدد سے چل رہی ہے،

بیرسٹر سلطان محمود نے کہا ہے کہ آج کشمیری نوجوان بھارتی گولیوں کا جواب نعروں اور پتھروں سے دے رہے ہیں، کشمیری عوام کو ایسی شاندار تحریک چلانے پر خراج تحسین پیش کرتا ہوں، کشمیری نوجوانوں کے خون کا نذرانہ رنگ کا رہا ہے،اب امریکا اور دیگر ممالک کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کر رہے ہیں،