مسافر کو جہاز کا باتھ روم استعمال کرنا مہنگا پڑ گیا

نیویارک ( مانیٹرنگ ڈیسک ) امریکی نشریاتی ادارے کے مطابق ڈیلٹا ائرلائن کی فلائٹ 2035 جارجیا کے شہر اٰیٹلانٹا سے ریاست وسکونسن کے شہر ملواکو کے لیے اڑان بھرنے والی تھی کہ جہاز میں سوار کیما ہملٹن نامی مسافر روانگی سے کچھ دیر قبل باتھ روم جانے کی حاجت ہوئی مگر جہاز کے عملے نے سیکیورٹی خدشات کے باعث مسافر کوباتھ روم استعمال نہ کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ اگر انہوں نے بات نہ مانی تو اپنی نشست کھودیں گے۔

کیما ہملٹن نے عملے کو بتایا کہ ایمرجنسی صورتحال کے پیش نظر لازمی باتھ روم جانا ہے مگر جہاز کا عملہ اپنی بات پر بضدرہا جس پرمسافر نے عملے کی بات نہ مانتے ہوئے باتھ روم استعمال کیا۔ مگر ایسا کرنا اسے مہنگا پڑا کیونکہ اس کے بعد کیما کو فلائٹ سے اتاردیا گیا۔
متاثرہ مسافر پیشے کے لحاظ سے استاد ہے جو بچوں کی تعلیم اور حقوق سے متعلق کام کرنے والی ایک سماجی تنظیم کا کارکن بھی ہے۔ کیما نے بتایا کہ مجھے جلد ریاست وسکوسن پہنچنا تھالیکن ایمرجنسی میں باتھ روم جانے کے جرم میں وقت پر اپنی منزل پر نہ پہنچ سکا۔

ائرلائن کمپنی نے واقعےپرمیڈیا سے بات کرنے سے انکار کردیا البتہ اطلاعات ہیں کہ کیما کوٹکٹ کی نصف رقم واپس کردی گئی تھی۔
جہاز میں سوار ایک خاتون مسافر نے یہ تمام واقعہ اپنی بلاگ پوسٹ میں لکھا کہ کیما ہملٹن نصف منٹ سے بھی کم وقت میں باتھ روم استعمال کر کے اپنی نشست پرآرہا تھا کہ جہاز عملے نے اسے نیچے اتارنے کا اعلان کردیا۔ مسافر کی جانب سے معذرت کرنے کے باوجود جہاز کے عملے نے اس کی ایک نہ سنی ور اپنا سامان اٹھاکر جہاز سے اتر جانے کو کہا۔