29

قومی یکجہتی کانفرنس میں علماء و مشائخ نے کشمیریوں کے پاکستان کیساتھ مضبوط اور لازوال رشتے کی اہمیت اجاگر کردی

راولاکوٹ : قومی یکجہتی کانفرنس ، بعنوان “منبر ومحراب کا کردار اور علماء و مشائخ کی ذمہ داریاں” سے خطاب کرتے ہوہے تمام مکاتب فکر کے جید علما اور روحانی سلاسل کے ممتاز مشائخ نے کہا ہے کہ آزادکشمیر کے نوجوانوں کا سوال درست، ستر سالوں سے خطے نے ترقی کیوں نہ کی ، اشرافیہ غریبوں کا درد محسوس کرے۔پاکستان امیدوں کا مرکز ہے پاکستان اور کشمیر ایک دوسرے کے لئے لازم و ملزوم ہیں۔

کشمیریوں کا پاکستان سے مضبوط اور لازوال رشتہ ہے جو ہماری آنے والی نسلوں تک رہے گا، شہیدوں و غازیوں کے وارث دفاع وطن کے لئے افواج پاکستان کے شانہ بشانہ ہیں ، آج ہی کے روز پونچھ دھرتی سے تعلق رکھنے والے پاک فوج کے شہید ہونے والے جونواں کو سلام عقیدت پیش کرتے ہیں۔ مقبوضہ کشمیر کے آزادی متوالوں کے پشتبان ہیں جلد آزادی کا سویر طلوع ہوگا۔

پاکستان اور آزاد جموں و کشمیر کی ترقی آپس میں جڑی ہوئی ہے،قومئ یکجہتی وقت کی ضرورت ہے ، قومی یکجہتی کی روح یہ ہے کہ پاکستان و کشمیر کے محروم طبقات کے مسائل کو حل کیا جائے کانفرنس سے سابق ممبر اسمبلی ڈاکٹر پیر علی رضا بخاری ، چئرمیں علماء و مشائخ کونسل مولانا امتیاز احمد صدیقی،ڈائریکٹر امور دینیہ مفتی نذیر احمد قادری،ڈاکٹر محمد الیاس مرکزی امیر جمعیت اھل حدیث،ڈاکٹر عبدالقدوس سینئر نائب صدر جماعت اھلسنت،مفتی عبدالخالق راہنما جمعیت علمائے اسلام ،علامہ محمد احمد ضلع مفتی پونچھ، ڈاکٹر مفتی نوید اصغر صدر پرائیوئٹ سکولز ایسوسی ایشن ،مولانا افتخار صدر جے یوآئی پونچھ،خان عبدالقیوم خان جنرل سیکرٹری جمعیت علما جموں و کشمیر،کونسلر راشد افراز، کونسلر سردار آفتاب عارف، کونسلر مفتی محفوظ شفیق،قاری خلیل احمد قادری ناظم اعلی تنظیم المدارس ازادکشمیر،علامہ افتاب کاشر راہنما راہ حق پارٹی،مولانا فاروق خطیبب بنجوسہ،مفتی سید مجتبی شاہ تحصیل مفتی ، مفتی نوید احمد تحصیل مفتی،مولاناتنویر بٹ،علامہ خورشید نقشبندی سابق ممبر اسلامی نظریاتی کونسل و دیگر نے بھی خطاب کیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں