نواز شریف کا ہری پور جلسہ فساد کی وجہ بن گیا۔۔۔

ہری پور (سٹیٹ ویوز/ویب ڈیسک ) ہری پور جلسہ ن لیگ میں پھوٹ ڈال گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق خیبرپختوںخواہ کے شہر ہری پور میں ہفتے کے روز ہونے والا جلسہ ن لیگ کی ضلعی قیادت میں اختلافات پیدا کر گیا۔ سینئر سیاستدان گوہر ایوب خان اور ان کے فرزند سابق وفاقی وزیر عمر ایوب خان کا پارٹی سے علیحدگی اختیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

دونوں رہنماوں نے ہفتے کے روز ہونے والے جلسے میں شرکت بھی نہیں کی۔ دونوں رہنماوں اور ن لیگ کے ہری پور سے منتخب ہونے والے ایم این اے بابر نواز خان کے درمیان شدید اختلافات چل رہے ہیں۔ گوہر ایوب اور عمر ایوب خان گروپ کا موقف ہے کہ بابر نواز خان کرمنل ریکارڈ کا حامل شخص ہے۔

ایسے شخص کو پارٹی نے رکن قومی اسمبلی منتخب کروا کر حلقے کی عوام کیساتھ زیادتی کی ہے۔ واضح رہے کہ ہری پور کے حلقہ این اے 19 سے 2013 کے انتخابات میں عمر ایوب خان بطور ن لیگ کے امیدوار کامیاب ہوئے تھے۔

تاہم بعد ازاں سپریم کورٹ کی جانب سے نااہل قرار دیے جانے کے بعد دوبارہ ہونے والے الیکشن میں ن لیگ کے ہی بابر نواز خان کامیاب قرار پائے تھے۔جبکہ دوسری جانب وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ پاکستان مکمل طور پر آزاد ملک نہیں ہے اور اسے آزاد ملک دیکھنا چاہتے ہیں۔

لاہور میں ’باب پاکستان‘ کی تعمیر نو کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ کونسا ایسا حملہ ہے جو ن لیگ پر نہیں کیا گیا ہو لیکن وزیر اعظم ہاؤس میں بیٹھا نوازشریف اتناخطرناک نہیں تھا، جتنا جاتی امرا میں بیٹھا خطرناک ہے۔انہوں نے کہا کہ ہماری بس کو جنگلا بس کہتے تھے

لیکن اب کے پی کے میں بنارہے ہیں اور میٹرو ٹرین کا منصوبہ 22ماہ تاخیر کا شکار ہوا تاہم جو مرضی کرلو شہباز شریف ٹرین چلادے گا۔ان کا کہنا تھا کہ ہم کل بھی کہیں گے اور پرسوں بھی کہیں گے کہ ہمیں انصاف چاہیے لیکن اب جلسوں میں لوگ یکجہتی اور محبت کا اظہار کرتے ہیں۔

وفاقی وزیر ریلوے نے کہا کہ ہم لڑنا اور اداروں سےمحاذ آرائی نہیں چاہتے لیکن ہم نے آج تک سبق نہیں سیکھا، اگر ادارے آپس میں لڑیں گے تو ملک آگے نہیں چلے گا۔ان کا کہنا ہے کہ پاکستان مکمل طور پر آزاد ملک نہیں اسے آزاد ملک دیکھنا چاہتے ہیں اور مکمل آزادی چاہیے ، ایسے ملک نہیں چلے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہماری باتوں کو حملہ تصور نہ کیا جائے اور ہمارے مشوروں کو غیر ذمے دارانہ نہ سمجھا جائے۔