سابق وفاقی وزیرکی اہلیہ انتقال کرگئیں

اسلام آباد، پاکپتن(سٹیٹ ویوز/ نیوز ڈیسک)سابق وفاقی وزیرمیاں غلام محمد مانیکا کی اہلیہ رضیہ سلطان انتقال کرگئیں، وہ کئی ہفتوں سے علیل اور80سال سے زائد عمر تھی۔انہوں نے سوگواران میں چار بیٹے خاور فرید مانیکا، احمد رضا مانیکا، فاروق احمد مانیکااور معزم محمود مانیکا اور ایک صاحبزادی کوچھوڑا۔

دی نیوز کے مطابق وہ 25دنوں سے ہسپتال کے آئی سی یو میں زیرعلاج تھیں ، رضیہ سلطان کا تعلق مانیکا خاندان سے تھا جو 1950ءسے سیاست میں اثرورسوخ رکھتا ہے اور اس خاندان کے کئی افرادکا نہ صرف مقامی بلکہ قومی سیاست میں بھی فعال کردار ہے ۔ مرحومہ کے شوہر غلام محمد مانیکا (مرحوم) خود کئی مرتبہ وفاقی وزیر رہے لیکن سابق فوجی صدر پرویز مشرف کی طرف سے بیچلر ڈگری لازمی قراردینے کی وجہ سے آخری الیکشن نہیں لڑسکے ۔

رضیہ سلطان کا اپنی شجرہ نصب جالندھر، انڈیا کے پٹھان خاندان سے تھاجو 1947ءمیں ہجرت کرکے پاکستان آگئے ، ان کے والد محمد احمد خان پاکستان بننے سے پہلے بھوپال ہائیکورٹ کے چیف جسٹس تھے ۔
مرحومہ کے بڑے صاحبزادے اور عمران خان کی مبینہ تیسری اہلیہ کے سابق شوہر خاور فرید مانیکا سینئر سرکاری افسرہیں جبکہ احمد رضامانیکا نے 2013ءکے عام انتخابات میں حصہ لیا تھا لیکن کامیاب نہیں ہوسکے تھے تاہم مقامی سیاست میں کافی فعال ہیں جبکہ مرحومہ کی اکلوتی صاحبزادی سابق ڈی جی آئی بی میاں اسلم حیات مانیکا کی بہو ہیں۔

حالیہ دنوں میں مانیکا فیملی اس وقت خبروں میں آئی جب پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے بشریٰ بی بی کو شادی کی تجویز بھیجی جنہیں رضیہ سلطان کے صاحبزادے خاور فریدمانیکا نے طلاق دی ، بشریٰ بی بی نے 30سال تک سسرال میں ازدواجی زندگی گزاری لیکن گزشتہ برس علیحدگی ہوگئی ۔