کسٹم حکام کی پکڑدھکڑ کیخلاف ایل او سی ٹریڈرز کا شدید احتجاج،نعرے بازی

مظفرآباد(سٹیٹ ویوز)کسٹم اسلام آباد کی جانب سے مقبوضہ کشمیر سے آنے والے مال کی پکڑ دھکڑ کے خلاف ایل او سی ٹریڈرز کا مرکزی ایوان صحافت مظفرآباد کے سامنے زبردست احتجاجی مظاہرہ کسٹم اسلام آبادکے خلاف نعرے بازی۔تفصیلات کے مطابق چکوٹھی اور تیتری نوٹ کراسنگ پوائنٹ سے تعلق رکھنے والے ایل او سی ٹریڈرز نے جمعرات کے روز بشارت نوری،سردار کاظیم ،خورشید میر،خوشحال قذافی،شاہد بٹ،راشد میر،نذیر بٹ،حامد رضا ہاشمی،انجم زمان ،مبارک اعوان ،چوہدری منیر،مظہر اقبال ،چوہدری امتیاز،راجہ ارشد،تنویر قریشی اور دیگر کی قیادت میں ایوان صحافت مظفرآباد کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا مظاہرین نے پلے کارڈ اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر کشمیر کی منڈی راولپنڈی ،ایل او سی ٹریڈرز کو پاکستان کی منڈیوں تک رسائی دو .

چیف آف آرمی سٹاف سے مسئلے کے حل کے مطالبے کی تحریریں درج تھی احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے ایل او سی ٹریڈرز نے کہا کہ پاکستان کسٹم مقبوضہ کشمیر سے آنے والے مالوں کی پکڑ دھکڑ کر کے آزاد و مقبوضہ کشمیر کے تاجروں کا معاشی قتل کر رہا ہے کسٹم کی کارروائیوں سے کشمیری تاجر شدید مالی نقصانات سے دو چار ہو چکے ہیں وفاقی و آزاد کشمیر حکومتیں اس مسئلے کے حل کے لیے فوری کردار ادا کریں اور یہ مسئلہ مستقل بنیادوں پر حل کیا جائے بصورت دیگر ایل او سی ٹریڈرز کی یہ تحریک جاری رہے گی .

اگر ہمارے جائزمطالبات کو حل کر نے کے لیے حکمرانوں نے اقدام نہ کیا تو ہمارا احتجاج سنگین صورتحال اختیار کر سکتا ہے پھر اس دوران نقصان کی تمام تر ذمہ داری حکمرانوںپر عائد ہو گی اگر ملکی قانون /پالیسی اس بات کی اجازت دیتی ہے اور ایل او سی ٹریڈ پر کسٹم عائد ہوتا ہے تو تاجر وہ بھی دینے کے لیے تیار ہیں اس کے لیے کوہالہ اور آزاد پتن کے مقامات پر کسٹم چیک پوسٹ قائم کی جائیں جہاں تاجر کسٹم کی ادائیگی کے بعد اپنے ٹرکوں کو پاکستانی منڈیوں تک لے جائیں بعض ذمہ داران کی درخواست پر آج ہمارا احتجاج پریس کلب کی حد تک محدود رہا اگر ہمارے جائز مطالبے کو پورا نہ کیا گیاتو اسمبلی کے سامنے دھرنا دینے کے علاوہ جیل بھرو تحریک شروع کی جائے گی