ٓآزادکشمیر میں این ٹی ایس کے ثمرات سامنے آنا شروع ہوگئے

باغ(سٹیٹ ویوز) وزیراعظم آزاد کشمیر کی طرف سے محکمہ تعلیم میں بھرتیوں میں این ٹی ایس رائج کرنے کے ثمرات سامنے آنا شروع ہو گئے ، حلقہ شرقی باغ یونین کونسل اسلام نگر کے گائوں چھم گراں میں 1976 ء سے قائم سرکاری پرائمری سکول میں 42 سال بعد پہلی بار سالانہ نتائج کے موقع پر تقریب تقسیم انعامات ، والدین اپنی بچوں کی کارکردگی دیکھ کر حیران رہ گئے ، والدین کے فرط جذبات سے آنسو نکل آئے ،

محکمہ تعلیم کے حکام نے بہترین کارکردگی پر اساتذہ کو بھی ایوارڈ دیئے ،پرائمری مدرس عازش علی بٹ بیسٹ ٹیچر ایوارڈ کے مستحق قرار پائے ۔ تفصیلات کے مطابق محکمہ تعلیم آزاد کشمیر میں بھرتی کیلئے 2017 ء میں پہلی بار این ٹی ایس نافذ کیا گیا جس کے تحت اگست 2017ء میں بھرتی ہونے والے اساتذہ نے سکولوں میں پہنچ کر اپنی مہارت اور علی ٰ تربیت کے تحت بچوں کوپڑھانے اور تربیت کرنے کا بیڑا اٹھا یا توبچوں کا رنگ ڈھنگ ہی بدل گیا اور والدین اپنے بچوں کی پرائیویٹ مہنگے سکولوں سے بھی بہتر تربیت اور کارکردگی دیکھ کر حیران رہ گئے ۔

یونین کونسل اسلام نگر کے گائوں چھم گراں میں42 سال بعد پہلی بار سالانہ امتحانات کے نتائج کےموقع پر تقریب تقسیم انعامات منعقد کی گئی جس میں سکول کے بچوں نے تقریریں کیں۔ بچوں کی شاندار کارکردگی دیکھ کروالدین کو خوشگوار حیرت ہوئی اور ان کی آنکھوں میں خوشی کے آنسوآ گئے۔ چوتھی کلاس میں نازش ، تیسری کلاس میں زرائبہ ، دوسری کلاس میں ثاقب اور پہلی جماعت میں محمد فہد نے پہلی پوزیشن حاصل کی، پوزیشن ہولڈر بچوں کو ٹرافیاں ، پرفارمنس سرٹیفکیٹ جبکہ پاس ہونے والے بچوں کو رزلٹ کارڈز تقسیم کئے گئے.

سکول کا نتیجہ 100 فیصد رہا ۔ والدین کا کہنا تھا کہ انہیں یقین نہیں آ رہا کہ ان کے بچے اتنی شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کر سکتے ہیں انہوں نےاساتذہ کی کارکردگی کو سراہا ان کا شکریہ ادا کیا اور انہیں مبارکباد دی ۔ تقریب سے خطاب میں وزیرجنگلات سردار میراکبر کے نمائندے اور علاقے کے سیاسی سماجی رہنما حاجی افسر خان نے سکول کی عمارت کی تعمیر و مرمت کیلئے ایک لاکھ روپے کی گرانٹ کا اعلان کیا،اس موقع پر اسسٹنٹ ایجوکیشن افسر حلقہ شرقی باغ مسٹر محمدافضل خان نے اساتذہ کو سخت محنت کر کے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے پر انعامات دیئے ،بیسٹ ٹیچر ایوارڈ عازش علی بٹ نے حاصل کیا ، قاری عمران بشیر کو تعریفی سرٹیفکیٹ جبکہ ایم اعجازالحسن کو اعزازی ٹرافی دی گئی ۔