وزیراعظم فاروق حیدر سے علی رضا بخاری کی ملاقات،قاری القراء کی اپ گریڈیشن کی سفارش

اسلام آباد(سٹیٹ ویوز)وزیر اعظم آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان سے ممبر آزاد جموں و کشمیر قانون ساز اسمبلی سجادہ نشین درگاہ بساہاں شریف پیر سید علی رضا بخاری نے ملاقات کی ہے اور وزیر اعظم کو ملک بھر اور بیرون ملک جاری ختم نبوت کانفرنسوں ، علماء و مشائخ کو درپیش مسائل اور قاری صاحبان کی اپ گریڈیشن کے معاملات کے حوالہ سے بریفنگ دی ۔

کشمیر ہاؤس میں ہونے والی ملاقات میں پیر علی رضا نے وزیر اعظم کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ آزاد کشمیر کی پارلیمنٹ کی جانب سے تحفظ ناموس رسالت کے حوالے سے کی گئی قانون سازی پر نہ صرف اندرون ملک بلکہ بیرون ممالک مقیم کشمیر یوں اور پاکستانیوں نے بھرپور خوشی کا اظہار کرتے ہوئے اسے مسلم لیگ ن آزاد کشمیر کی حکومت کا اہم کارنامہ قرار دیا ہے ۔ پیر علی رضا بخاری کے مطابق وزیر اعظم راجہ محمد فاروق حیدر خان نے ملک بھر میں تسلسل کے ساتھ ختم نبوت کانفرنسوں کے انعقاد جس میں گزشتہ روز اسلام آباد بار کے زیر اہتمام کانفرنس بھی شامل ہے پر خوشی اور اطمینان کا اظہار کیا اور کہا ہے کہ اس سے ہماری پارلیمان اور حکومت کی نیک نامی ہوئی ہے ۔

وزیراعظم نے کہا کہ اندرون ملک اور بیرون ملک عاشقان رسول کی دعوت پر ختم نبوت کانفرنسوں کا انعقاد ہمارے لئے بڑے اعزاز کی بات ہے علماء و مشائخ کے مسائل کے حوالے سے وزیر اعظم نے کہا کہ ان ایشوز کو بڑی سنجیدگی سے لیکر انہیں حل کیا جائے گا۔ تجوید القرآن کے قاری صاحبان اور محکمہ افتاء کی مزید پانچ اضلاع تک توسیع کے علاوہ اور امور دینیہ کی سرپرستی و قاری صاحبان کی اپ گریڈیشن کی جائے گی ۔

وزیر اعظم نے کہا کہ قانون کا غلط استعمال کر کے کسی پربے بنیادالزام نہ لگے اس حوالے سے بھی قانون سازی کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی علماء ومشائخ سے مشاورت ہمیشہ سے ترجیح رہی ہے اور آئندہ بھی ہم علماء و مشائخ سے مشاورت کا عمل جاری رکھیں گے اور علماء ومشائخ کے تمام مسائل حل کئے جائیں گے۔