گلگت بلتستان اسمبلی،وزیراعظم کی موجودگی میں اراکین گتھم گتھا،اپوزیشن کاواک آؤٹ

گلگت(سٹیٹ ویوز) گلگت بلتستان اسمبلی میں جی بی آرڈیننس 2018کیخلاف وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی کی موجودگی میں اپوزیشن کا احتجاج ،گلگت بلتستان آرڈرکی کاپیاں پھاڑدیں،اسمبلی سے واک آؤٹ۔ پی ٹی آئی کے اپوزیشن رہنما راجہ جہانزیب پر ن لیگ کے رہنما میجر آمین نے ہاتھ اٹھا لیا جس کے بعد راجہ جہانزیب اپنی بیساکھی سے میجر آمین پروزیراعظم کی موجودگی میں ٹوٹ پڑے۔

دریں اثناء اس موقع پر وزیرِاعظم شاہدخاقان عباسی نے کہاکہ اختلاف رائے سب کاحق ہوتا ہے، لیکن اپوزیشن کا اختلاف اصولوں پر ہونا چاہیے انہیں حکومت کا مؤقف بھی سننا چاہئے۔

گلگت بلتستان آرڈر 2018 کی منظوری کے موقع پر گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ جی بی آرڈر پر گزشتہ 8 ماہ سے کام کیا جا رہا تھا، آج کا آرڈر چند روز کا کام نہیں تھا، بہت سے لوگ اختیارات کی منتقلی نہیں چاہتے تھے سب سے بڑی مخالفت ہماری حکومت کے اندرتھی لیکن آج (ن) کی محنت اور کاوشوں کا نتیجہ ہے کہ گلگت بلتستان کی اپنی سول سروس بنانے کی اجازت دے دی گئی ہے پاکستان کی سول سروس میں بھی جی بی کو کوٹا دیاجائےگا۔