یمن میں شدید لڑائی ،درجنوں افراد جاں بحق،فوج کا بڑے علاقے پر قبضہ

یمن(سٹیٹ ویوز) شمالی صوبے صعدہ کے ضلع باقم میں سرکاری فوج اور حوثی باغیوں کے درمیان شدید جھڑپوں کی اطلاعات ملی ہیں اور ان میں 25 حوثی جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔فوج نے باقم میں چار مربع کلومیٹر میں واقع مزید علاقے آزاد کرا لیے ہیں۔

یمنی فوج کے بریگیڈئیر جنرل یاسر الحارثی نے بتایا ہے کہ ان کے دستوں نے عرب اتحاد کے لڑاکا جیٹ کی مدد سے الاسود اور غرہ کے پہاڑی سلسلوں کے علاوہ قصبے محدیدہ سمیت دوسرے علاقے آزاد کرا لیے ہیں۔یمنی فوج نے باقم اور بین الاقوامی بارڈر کراسنگ الآب کے درمیان شاہراہ کی جانب بھی پیش قدمی جاری رکھی ہوئی ہے۔

ان محاذوں پر لڑائی میں حوثی ملیشیا کے بعض کمانڈروں سمیت 25 جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔ فوج نے باقم میں حوثیوں کی بعض چوکیوں تک کمک پہنچانے کے راستے منقطع کر دیے ہیں جس کی وجہ سے وہاں موجود باغی جنگجو محصور ہو کر رہ گئے ہیں۔

یمنی فوج کے ہاتھوں شکست کے بعد بہت سے حوثی جنگجو اپنے ہتھیار چھوڑ کر میدان جنگ سے راہ فرار اختیار کر گئے ہیں۔انھوں نے اپنے پیچھے اسنائپر رائفلیں، مارٹرز، بی 10 رائفلیں، گولہ بارود سے لدی تین گاڑیاں، راکٹ گرینڈ، تھرمل میزائل، موٹر سائیکلیں اور لاسلکی مواصلاتی آلات چھوڑے ہیں۔ فوج نے انھیں اپنے قبضے میں لے لیا ہے۔