بھارت نےامریکی دھمکیوں کےباوجود روس سےبڑامعاہدہ کرلیا

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) جنگی جنون میں مبتلا ہندوستان کی مودی سرکار نے امریکہ کی طرف سے پابندیوں کی پرواہ کئے بغیرآج روس سے تقریباً چارسو کلومیٹر تک فضا سے فضا میں مار کرنے والے جدید ترین ایئر ڈیفنس سسٹم ایس 400 کی خریداری

سمیت 8 دیگر معاہدوں پر دستخط کردیئے ہیں،روسی صدر اور بھارتی وزیر اعظم نے ملاقات میں دہشت گردی سے مقابلہ ، ماحولیاتی تبدیلی اور ہند بحرالکاہل خطہ میں باہمی تعلقات کو فروغ دینے کے عزم کا اظہار بھی کیا ہے۔ بھارتی نجی ٹی وی کے مطابق ہندوستان کے دورے پر آئے روس کے صدر ولادیمیر پوٹن اور وزیر اعظم نریندر مودی نے دونوں ملکوں کے درمیان اپنے خصوصی اور سٹریٹیجک تعلقات کو نئی جہت دیتے ہوئے آج باہمی تعاون کے آٹھ معاہدوں کے علاوہ دفاعی شعبے میں نہایت اہم ائیر ڈیفنس سسٹم ایس 400میزائل کی خریداری کے معاہدے پر دستخط کر دیئے ہیں۔

مزید پڑھیں:
امریکی صدرنےدہشت گردی کےخلا ف نئی پالیسی کی منظوری دے دی

ہندوستان روس سے 5.43 ارب ڈالر یعنی تقریباً 40 ہزارکروڑ روپئے میں فضا سے فضا میں مارکرنے والے ان غیرمعمولی میزائیلوں کے پانچ سکوارڈن خریدے گا،بھارت کو میزائیلوں کی سپلائی دستخط ہونے کے دوسال کے اندریعنی 2020 تک شروع ہوجائے گی، بھارت نے روس سے جدید میزائیل سسٹم کی خریداری کا معاہدہ امریکہ کی اُس وارننگ کے باوجود کیا ہے جس میں ٹرمپ انتظامیہ نے روس سے ہتھیار خریدنے پر انڈیا کو اقتصادی پابندی کے شکنجے میں کسنے کی دھمکی دی ہے۔

دوسری طرف ہندوستان نے وزیر دفاع اوروزیر خارجہ کی سطح پر امریکہ کو پہلے ہی واضح کردیا تھا کہ وہ روس سے ایس 400 میزائل کی خریداری سے پیچھے نہیں ہٹے گا، روس کے ساتھ اس کے دہائیوں پرانے دفاعی تعلقات ہیں اور اس سے طویل عرصے سے دفاعی ساز وسامان خرید رہا ہے اور ایس 400 میزائیل خریداری پر بھی طویل عرصے سے بات چیت چل رہی تھی۔