سیزفائرلائن کےقریب ہزاروں طلبہ ہندوستان کیخلاف سڑکوں پرنکل آئے

چناری (سٹیٹ ویوز) مقبوضہ جموں کشمیر میں بھارتی ریاستی دہشتگردی خطے میں بدامنی کو ہوا دینے پر سیزفائرلائن کے قریب ہزاروں طلبہ کا ہندوستان کیخلاف احتجاج، پاسبان حریت جموں کشمیر کے زیراہتمام چناری کے مقام ریڈ فاؤنڈیشن کالج کے طلبہ، طالبات، تاجران، سول سوسائٹی کے نمائندے سرینگر روڈ پرچکوٹھی کی جانب سیاہ پٹیاں باندھ کرمارچ میں شریک ہوئے.

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ جموں کشمیر میں بڑھتے ہوئے انسانیت سوز مظالم پر جنگ بندی لائن کے قریب چناری کے مقام پر پاسبان حریت جموں کشمیر کے زیراہتمام  بھارت کیخلاف ریلی کا انعقاد کیا گیا، ریلی میں چیئرمین پاسبان حریت جموں کشمیر عزیر احمد غزالی، وائس چیئرمین انٹرنیشنل فورم فارجسٹس اینڈ ہیومن رائٹس  مشتاق الاسلام ، پی پی رہنما شوکت جاوید میر، پرنسپل ریڈفاونڈیشن کالج راجہ محمد ندیم، منصور عالم قریشی، مرزا آصف، عثمان علی ہاشم، سمیت ریڈفاونڈیشن کے طلبہ و طالبات سمیت استاتذہ کرام، سول سوسائٹی اور تاجران نے بھرپورشرکت کی. شرکا نے بھارت مخالف اور آزادی کے حق میں نعرے بازی کی، ریلی کے  شرکا نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے طلبہ و طالبات سر پر سیاہ پٹیاں باندھ کر بھارت مخالف احتجاج میں شریک ہوئے.

اس موقع پر ریلی سے خطاب کرتے ہوئے عزیر احمد غزالی نے کہا کہ بھارت ریاستی دہشتگردی کے ذریعے خطے میں بدامنی کو ہوا دے رہا ہے، جموں کشمیر کے عوام کے حقوق پامال  کیئے جاریے ہیں، عالمی برادری مداخلت کرتے ہوئے بھارت کو دہشتگردانہ کارروائیوں سے روکے، جنوبی ایشیاء میں امن اور سلامتی کو بھارتی حکومت اور افواج سے شدید خطرات لاحق ہیں. انہوں نے کہا کہ مقبوضہ جموں کشمیر کی عوام نے فوج کے پہرے میں جاری ڈھونگ انتخابات کو مسترد کردیا ہے، مقبوضہ ریاست جموں و کشمیر میں جعلی انتخابات استصواب رائے کا متبادل نہیں ہوسکتے انہوں نے کہا کہ متحدہ حریت قائدین کی بلا جواز گرفتاریاں اور نظر بندیاں قابل مذمت اور بھارتی بوکھلاہٹ کا نتیجہ ہیں، اقوام متحدہ جموں کشمیر میں حق خودارادیت کے وعدے کو پورا کرے.

مشتاق الاسلام نے کہا کہ مقبوضہ جموں کشمیر میں کالے قوانین کے نفاذ کی وجہ سے نہتے عوام کے حقوق پامال ہو رہے ہیں ہزاروں بے گناہ کشمیری بھارتی جیلوں قید ہیں، انسانیت سوز مظالم پر خاموش نہیں رہ سکتے، جموں کشمیر کے عوام کو جب تک پیدائشی حق نہیں مل جاتا کشمیر کے عوام تحریک کی تکمیل کے لئے آزادی کےلئے جدوجہد جاری رکھیں.

شوکت جاوید میر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر میں غاصب بھارتی فورسز جمہوریت کاقتل عام کرنے کے ساتھ ساتھ نہتے عوام کو گولیوں کا نشانہ بنا رہی ہے آزادکشمیر کے عوام مقبوضہ جموں کشمیر کے مظلوم بھائیوں کے ساتھ ہیں اور انکی مبنی برحق تحریک کی آواز ہر فورم پر بلند کرتے رہیں گے، انہوں نے کہا کہ پی پی کی بنیاد ہی مسئلہ کشمیر پر رکھی گئی ہے اور جب تک کشمیریوں کو ان کا پیدائشی حق نہیں مل جاتا ہم بھی چین سے نہیں بیٹھیں.

اس موقع پر ریڈ فاونڈیشن سکول کے پرنسپل راجہ محمد ندیم خان نے بھی بھارتی مظالم کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور کہا کہ ہم اپنے مظلوم بھائیوں کیساتھ ہیں اور بھارتی مظالم پرعالمی برادری کی خاموشی انسانی حقوق کے دعویداروں کے منہ پر طمانچہ ہے، مقبوضہ جموں کشمیر کے مظلوم عوام کا خون بھی سرخ ہے اور دیگر انسانوں کا بھی پھر کیوں اقوام عالم بھارتی ریاستی دہشتگردی پر خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے.

اس موقع پر مقررین نے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے خطاب کو سراہا اور کہا کہ انشااللہ جموں کشمیر کی عوام کی حقائق پر مبنی تحریک ضرور آزادی سے ہمکنار ہوگی.