پنجاب یونیورسٹی کےسابق وائس چانسلرکونیب نےحراست میں لےلیا

لاہور(سٹیٹ ویوز) پنجاب یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر مجاہد کامران کو قومی احتساب بیورو (نیب) نے حراست میں لےلیا۔ نیب نے پنجاب یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر کو تحقیقات کے لیے طلب کیا تھا۔

سابق وائس چانسلرپنجاب یونیورسٹی مجاہد کامران نے آج نیب دفتر لاہور میں پیش ہو کر اپنا بیان ریکارڈ کرایا، جس کے بعد نیب حکام نے انہیں حراست میں لے لیا۔ ان کے خلاف انکوائری کی منظوری چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کی سربراہی میں نیب کےایگزیکٹو بورڈ نے دی تھی۔

مزید پڑھیں:
نیاپاکستان ہاﺅسنگ پروگرام: نادراکی ویب سائٹ پرلوگ ٹوٹ پڑے

نیب ذرائع کے مطابق ڈاکٹر مجاہد کامران پرمبینہ طور پر یونیورسٹی میں خلافِ ضابطہ 550 افراد کی بھرتیوں اور بے ضابطگیوں کا الزام ہے۔ اس کے علاوہ ان پر اپنی اہلیہ شازیہ قریشی کو غیرقانونی طور پر یونیورسٹی لاء کالج کی پرنسپل تعینات کرنے، من پسند طلباء کو وظائف دینے اور پیپرا رولز کی خلاف ورزی کرتے ہوئے من پسند کنٹریکٹر کو ٹھیکے دینے جیسے بھی الزامات ہیں۔ ڈاکٹڑ مجاہد کامران کو کل احتساب عدالت میں پیش کرکے ان کا جسمانی ریمانڈ حاصل کیا جائے گا۔