ینگ ویمن رائٹرزفورم اور سٹیٹ ویوزکاخواتین کی تخلیقی صلاحیتوں کواجاگرکرنےپراتفاق

اسلام آباد(سٹیٹ ویوز) ینگ ویمن رائٹرز فورم اسلام آباد چیپٹر کے خصوصی وفد نے سٹیٹ ویوز مرکزی دفتر کا دورہ کیا۔ وفد کو ڈیجیٹل میڈیا کےبارے میں تفصیلی بریفنگ دی گئی جبکہ سٹیٹ ویوز کی اردو اور انگلش نیوز سائٹس، سوشل میڈیا پر خبروں کی تشہیر کے طریقہ کار اور اس کے اثرات کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔

سٹیٹ ویوز کے ایڈیٹر سید خالد گردیزی اور کنٹرولر نیوز کاشف میر نے ینگ ویمن رائٹرز فورم پاکستان کی بانی بشریٰ اقبال ملک ، اسلام آبادچیپٹر کی کوفاوُنڈر رابعہ بصری اور صدر فرحین خالد سمیت تمام ممبران کو سٹیٹ ویوز کے نیوز سیکشن، آئی ٹی سیکشن ، ایڈیٹنگ سیکشن سمیت سٹوڈیو کا دورہ بھی کروایا ۔ سٹیٹ ویوز اور ینگ ویمن رائٹرز فورم اسلام آباد چیپٹر کے ذمہ داران کے درمیان مشاورت کے بعد یہ طے پایا کہ دونوں ادارے خواتین کو مضبوط بنانے اور انکی تخلیقی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے کیلئے مستقبل میں ایک دوسرے کے ساتھ ملکر آگے بڑھیں گے۔

ینگ ویمن رائٹرزفورم کی سربراہ بشریٰ اقبال ملک نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ویمن رائٹرز فورم بنانے کا مقصد یہ تھا کہ خواتین کو معاشرے میں خواتین کی تخلیقی صلاحیتوں کو اجاگر کیا جائے اور انہیں مضبوط بنایاجائے ۔ بشریٰ اقبال ملک کا کہنا تھا کہ خواتین دورِ قدیم سے ہی اہم کردار ادا کرتی رہی ہیں لیکن نا معلوم وجوہات کی بنا پر انہیں تاریخ میں تسلیم نہیں کیا گیا۔

اسلام آباد چیپٹر کی شریک بانی، معروف مصنفہ، بلاگر اور شاعرہ رابعہ بصری ہیں جن کا تعلق پاکستان کے حسین ترین علاقے بلتستان سے ہے۔ رابعہ بصری صاحبہ نے واضح موقف اختیار کرتے ہوئے کہا کہ نوجوان خواتین لکھاریوں کی رہنمائی کرتے ہوئے ادب کی ترویج اور فروغ میں اپنا کردار ادا کرنا ہے ان کا کہنا تھا کہ ہم ممبران کے لئے مختلف تربیتی اور گرومنگ سیشنز کا انعقاد کرتے ہیں یہ پاکستان کا واحد فورم ہے جہاں لیڈرز ، کابینہ اور تمام ممبران خواتین ہیں ۔ اراکین کی تحاریر عام لوگوں تک پہنچانے کے لئے پرنٹ اور الیکٹرانک و ڈیجیٹل میڈیا کی مدد لی جاتی ہے ۔ بہت سی ممبرز کی کتابیں بھی پبلش ہوچکی ہیں ۔ ہماری بھرپور کوشش ہے کہ اس پلیٹ فارم کے زیرِ سایہ ممبرز کی تخلیقی صلاحیتوں کو نکھار کے سامنے لایا جائے ۔ ہم پاکستان کو بہترین بیٹیاں اور مائیں دینا چاہتے ہیں جن کی سوچ مثبت ہو اور وہ اپنی عظمت قائم رکھتے ہوئے اور اپنی حدود میں رہتے ہوئے پاکستان کی تعمیر میں عملی حصہ ڈال سکیں ۔ممبرز کی شخصیت سازی اور کردار سازی میں بھی انہیں رہنمائی دینا اور ہر طرح سے مدد فراہم کرنا ہمارا مشن ہے ۔

ینگ ویمن رائٹر فورم اسلام آباد کی صدر فرحین خالد نے کہا کہ ہماری بچیوں میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں ہے اور انہیں جس بھی فیلڈ میں کام کرنے یا آگے بڑھنے کا موقع ملا یہ اپنا آپ منوا لیتی ہیں۔ پاکستان کو توانا کرنا کیلئے اس کی خواتین اور بچیوں کو بھی آگے آنے کا موقع دیا جانا چاہیے تاکہ ترقی کا عمل تیز ہو اور ہم دنیا کے ساتھ مقابلہ کر سکیں۔ وفد میں شامل دیگر ممبران میں میمونہ صدف ، صفیہ شاہد ، معافیہ شیخ ، طاہرہ غفور اور امبر نے فورم کی کاوشوں اور مثبت کردار کا ذکر کرتے ہوئے اسی عزم کا اعادہ کیا وہ آج جو فورم سے سیکھ رہی ہیں کل اس سے مزید خواتین لکھاریوں کی شخصیت اور کردار سازی میں مددگار ثابت ہونگی۔