پیغام جناب سردارمسعودخان صدر آزاد جموں وکشمیر

بسم اللہ الرحمان الرحیم

آج سارے آزاد جموں وکشمیر میں 71واں یوم تاسیس روایتی جوش و جذبہ اور اس عہد کی تجدید کے ساتھ منایا جارہا ہے کہ جس عظیم مقصد کیلئے بیس کیمپ کی اس حکومت کا قیام عمل میں لایاگیا تھا اس کے حصول تک جدوجہد پوری شد و مد سے جاری رکھی جائے گی۔ تقسیم ہند کے طے شدہ فارمولے کے مطابق ہندوستان کی تمام تر ریاستوں کویہ اختیار دیا گیا تھا کہ اگر ان میں مسلمانوں کی اکثریت ہوگی تو وہ پاکستان اور ہندوؤں کی اکثریت ہوگی تو ہندوستان کے ساتھ الحاق کر سکیں گی۔

ریاست جموں وکشمیر میں مسلمانوں کی اکثریت تھی اور اس پالیسی کے تحت ریاست جموں و کشمیر کا الحاق پاکستان کے ساتھ ہونا تھا لیکن ریاست کے ڈوگرہ مہاراجہ نے اس کا الحاق بھارت کے ساتھ کر دیا۔اس پر احتجاج کرتے ہوئے ریاست جموں وکشمیر کے عوام نے جو طاقت اور قوت میں مہاراجہ کی فوجوں سے کہیں کم تھے اس فیصلے کے خلاف علم بغاوت بلندکر دیا اور اپنے زور بازو سے ریاست کے اس حصے کو آزاد کرا کر حکومت قائم کردی جسے آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر کا نام دیا گیااور جس کاآج ہم 71واں یوم تاسیس منا رہے ہیں۔

KASHMIR NEW

1947میں کشمیر ی مجاہدین نے بھارت کی فوج کا مقابلہ بڑی پامردی اور جرات سے کیا تھا اور کما ل عزم و استقلال کا مظاہرہ کیا تھا۔ مجاہدین ہر قدم پر فتح و نصرت کے جھنڈے گاڑ تے ہوئے آگے بڑھتے گئے اور ریاست کا ایک بڑاحصہ بھارتی اور ڈوگرہ فوج کے تسلط سے آزادکرالیا۔ بھارت مجاہدین کشمیر کے حملوں کی ہر تاب نہیں رکھتا تھا چنانچہ اس نے اقوام متحدہ سے جنگ بندی کی اپیل کر دی اور اقوام عالم کے سامنے یہ وعدہ کیا کہ وہ کشمیری عوام کو رائے شماری کے ذریعے اپنے تقدیر کا فیصلہ کرنے کا موقع فراہم کریگا۔ کشمیری عوام بر س ہابرس تک انتظار کرتے رہے کہ انہیں رائے شماری کے ذریعے فیصلہ کرنے کا موقع فراہم کیا جائے گا لیکن بھارت نے ایسا موقع دینا تھا نہ دیا۔

بھارت کی وعدہ خلافیوں سے مایوس ہو کر مقبوضہ کشمیر میں عوام نے پر امن تحریک مزاحمت شروع کر دی جس کے نتیجے میں ڈیڑھ لاکھ سے زائد کشمیری اپنے جانوں کا نذرانہ پیش کر چکے ہیں اور ہندوستان نے کشمیر جنت نظیر کو خون سے لالہ زار بنادیا۔ کشمیری عوام نے اپنی آزادی اور حق خودارادیت کے حصول کیلئے تاریخی قربانیاں پیش کی ہیں جس سے ساری دنیا پر یہ واضح ہو گیا ہے کہ وہ اپنے نصب العین کو حاصل کر کے رہیں گے۔

اپنے بہن بھائیوں کی کامیابی کیلئے تمام تر وسائل کو بروئے کار لائیں گے۔ آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر کے یوم تاسیس کے موقع پر میں آزادی کی راہ میں اپنے خون کا نذرانہ پیش کرنے والوں کو زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے انہیں یقین دلاتا ہوں کہ حکومت اورعوام ان کے ساتھ ہیں اور ہماری جدوجہد اس وقت تک جاری رہے گی جب تک ساری ریاست کو آزاد کرا کر الحاق پاکستان کی دائمی منزل حاصل نہیں ہو جاتی۔ اللہ تعالیٰ ہمارا حامی و ناصر ہو ،آمین۔

پاکستان پائندہ باد ، آزاد جموں وکشمیر زندہ باد

PAID CONTENT