پانی ملا دودھ نہیں پیو گی تو تندرست کیسے رہو گی؟

صورتحال بہت دلچسپ ھے۔ راولپنڈی شہر کی اکلوتی فاطمہ جناح وویمن یونیورسٹی میں انتظامیہ کا ہاسٹل میں رہائش پذیرسینکڑوں طالبات سے سوتیلی ماؤں جیساسلوک کررہی ہے۔

طالبات سے پورے پیسے چارج کرنے کے باوجود غیر معیاری کھانا، ناشتہ، پانی ملا دودھ اور استعمال کے لیئے ٹھنڈا یخ پانی دیا جاتا ہے وہ بھی رات کو لڑکیوں کو مجبور کیا جاتا ہے کہ اپنی اپنی بالٹیوں میں پانی ٹینکی سے بھر کے سٹور کرلو۔پھر نہ کہنا صبح پانی نہیں ملااس لئےمنہ نہیں دھوسکیں۔علاوہ ازیں ہوسٹل اور کامن رومز میں ٹی وی /کیبل تک نہیں ہےتاکہ یہ ملکی حالات سے باخبرنہ رہ سکیں۔

واہ کینٹ روٹ پر یونیورسٹی کی صرف ایک بس چلتی ہے جس کی وجہ سے وہاں سے آنے والی طالبات کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

طالبات نےگذشتہ ہفتے ہاسٹل انتظامیہ اور چئیرمین ہال کونسل کے خلاف شدید احتجاج بھی کیا اور سی ایم پنجاب میاں شہباز شریف اور چانسلر/گورنر پنجاب رفیق راجوانہ سے نوٹس لینے کی اپیل بھی کی مگرابھی تک حکومت اوریونیورسٹی انتظامیہ کےکانوں میں جوں تک نہیں رینگی کیونکہ ہیڈ اینڈ شولڈرسےبال دھوئیں تو جوئیں ویسےہی ختم ہوجاتی ہیں۔

متعددطالبات نے”سٹیٹ ویوز”کوبتایاکہ “دیکھیں ہم سے ہاسٹل اور میس ڈیوز پورے لیئے جاتے ہیں جبکہ ناشتے میں مینیو کے برخلاف ڈبل روٹی اور چینی کھانے کو دی جاتے ہے۔یہ سراسر نا انصافی ہے”

ایک طالبہ کا کہنا تھا کہ اور تو اور اولپرز دودھ کے تین لیٹر پیکزمیں پانی ملا کے درجنوں طالبات کے لیے چائے تیار کی جاتی ہے جو کہ پینے کے قابل نہیں ہوتی۔ طالبات کو یہ دودھ پینے کو بھی دیا جاتا ہے جو صحت کے لیئے نقصان دہ ہے۔

“ہاسٹل میں گرم پانی نہیں دیا جاتا۔ شدید سردی میں ہم بہت پریشان ہیں۔ہمیں رات کو کہا جاتا ہےکہ اپنی اپنی بالٹی لاؤ اور ٹینکی سے پانی بھر کے اپنے روم میں رکھ لو” ایک طالبہ کا نام نہ شائع کرنے کی شرط پر سٹیٹ ویوز کومزید بتایا۔

ہاسٹلز میں انٹرنیٹ کی سہولت میسر نہیں جس کے باعث ہمیں نوٹس لینے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

وی سی فاطمہ جناح وویمن یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر سمینہ امین قادر کو جب سٹیٹ ویوز نے ان کے موبائل نمبر پر ایس ایم ایس کر کے ان کی اس پریشان کن صورتحال کے بارے میں رائے جاننا چاہی تو ان کا کہنا تھا کہ آجکل یونیورسٹی بند ہے تاہم میں معاملات کی انکوائری کر کے اپنا موقف دوں گی۔

وی سی کی ہدایت پر کچھ دیر بعد چئیرمین ہال کونسل ڈاکٹر اظہرہ یاسمین نے سٹیٹ ویوز کو فون کیا اور کہا ہاسٹلز کے تمام معاملات ٹھیک ہیں اور سٹوڈنٹس کو معیاری کھانا دیا جاتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ سٹیٹ ویوز کو وی سی سے میٹنگ کرنی چاہیے۔ انھوں نے کہا کہ وہ خود تمام معاملات کا روز جائزہ لیتی ئیں۔ ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ لڑکیوں نے گرم پانی کی عدم دستیابی کے خلاف کوئی مظاہرہ نہیں کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں