چوہدری طارق فاروق نےجی بی کوعارضی یامستقبل صوبہ بنانا نقصان دہ قراردیدیا

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر/سٹیٹ ویوز) سینئر وزیر، فزیکل پلاننگ، ہاوسنگ وآبپاشی آزاد حکومت اورمسلم لیگ نواز آزاد کشمیر کے سینئر رہنما چوہدری طارق فاروق نےگلگت بلتستان کوآئینی پیکج دینےکی حمایت جبکہ اس علاقےکاسٹیٹس بدلنےکی مخالفت کردی۔

سٹیٹ ویوز سے بات چیت کرتے ہوئے چوہدری طارق فاروق کا کہنا تھا کہ ہندوستان تمام تر سازشوں اورخواہش کےباوجود مقبوضہ کشمیر کا سٹیٹس نہیں بدل سکتا توموجودہ حکومت پاکستان کو بھی اس علاقے کاسٹیٹس بدلنے کی کوشش نہیں کرناچاہیے۔

انکا کہنا ہے کہ حکومت پاکستان کو کسی قسم کا ایڈونچرکرنے سے پہلے ریاست جموں وکشمیراورگلگت بلتستان بارے بین الاقوامی قوانین سمیت پاکستان کے آئین کا مطالعہ کرکے فہم وفراست اورعقل کی بنیاد پرفیصلہ کرناچاہیے۔چوہدری طارق فاروق کا کہنا ہے کہ جی۔بی کا سٹیٹس بدلنےسےکشمیرپرنہ صرف پاکستان کے موقف کو نقصان پہنچے گا بلکہ تنازعہ کشمیرکوبھی نقصان ہوگا اوربھارت کوفائدہ ہوگا جبکہ عملاً دونوں ممالک یکطرفہ فیصلہ نہیں کرسکتے ہیں۔

مزید پڑھیں:
شاہ محمود قریشی نےپاکستان اوربھارت میں لڑائی کوخودکشی کےمترادف قراردیدیا

چوہدری طارق فاروق کا یہ بھی کہنا ہےکہ یہ حساس اورقومی نوعیت کا ایشو ہے جس پر ملکی سطح پراتفاق رائے کیساتھ اس بات پر مشاورت کی ضرورت ہے کہ گلگت بلتستان کو زیادہ سےزیادہ آئینی اختیارات کیسے دیئےجائیں۔انکا کہنا ہے کہ آزادکشمیر کیلئے بزرگوں نے جدوجہد کرکے ایکٹ 74 لیا اوراب ہم نے مشکل سے 13 ویں ترمیم لاکر ایکٹ کوعبوری آئین میں بدلا۔گلگت بلتستان والوں کو آزادکشمیر والوں سے بڑھ کر آئینی حقوق دیں لیکن اسکاطریقہ کارکیا ہوگا وہ جی بی والوں سمیت سب کی مشاورت سے طےکریں۔