یورپ کی دوسیاح خواتین بلند و بالا برفانی چوٹیوں پر قتل

رباط(مانیٹرنگ ڈیسک) ڈنمارک اور ناروے سے تعلق رکھنے والی دو طالبات مراکش کے سیاحتی مقام پر پہنچ کر تیز دھار آلے سے قتل۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق مراکش کے سیاحتی پہاڑی سلسلے اٹلس کی بلند چوٹی پر قائم ایک کیمپ سے ناروے اور ڈنمارک کی دو طالبات کی لاشیں ملی ہیں۔

طالبات کے گردن پر تیز دھار آلے کا نشان ہے۔لاشوں کی شناخت ناروے کی 28 سالہ طالبہ مارین کے نام سے ہوئی ہے تاہم ڈنمارک سے تعلق رکھنے والی طالبہ کی شناخت نہیں ہوسکی ہے۔ ناروے کی یونیورسٹی میں زیر تعلیم دونوں طالبات کرسمس کی تعطیلات منانے سیاحتی مقام آئی تھیں۔

مراکش پولیس نے سیاح طالبات کے ممالک کو قتل سے آگاہ کردیا جب کہ ایک ملزم کو گرفتار کرنے کا بھی دعویٰ کیا گیا۔ ملزم سے قتل کے محرکات جاننے کے لیے تفتیش کی جارہی ہے۔ دیگر ملزمان کی تلاش جاری ہے۔

ناروے کی مقتول طالبہ مارین کی والدہ نے اپنی بیٹی کی تصاویر سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ دونوں طالبات تمام تر حفاظتی اقدامات کے ساتھ مراکش گئی تھیں۔