وفاقی وزیر برائے امور کشمیر و گلگت بلتستان علی امین گنڈا پورکا احتسابی عمل آزاد کشمیر تک پھیلانے کا اعلان

اسلام آباد ( علی حسنین نقوی/سٹیٹ ویوز) وفاقی وزیر برائے امور کشمیر و گلگت بلتستان علی امین گنڈا پور نے کہا ہے کہ آزاد کشمیر میں کشمیریوں کی نمائندگی وہ لوگ کر رہے ہیں جن سے اگر احتساب کی بات کی جائے تو ان کی چیخیں نکل جاتی ہیں، احتساب سے وہی گھبراتا ہے جو کرپٹ ہوتا ہے، ہم احتسابی عمل آزاد کشمیر تک پھیلائیں گے، ایف آئی اے اور نیب کو آزاد کشمیر تک پھیلائیں گے ۔ان خیالات کا اظہار وزیر امور کشمیر نےاسلام آباد میں میٹ دی پریس میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا وزیراعظم آزاد کشمیر کہتے ہیں کہ وہ عالمی سطح پر بات کریں گے کشمیر کی ، انہیں پہلے یہ دیکھنا چاہیے کہ ان کا لیڈر کون ہے ان کا لیڈر وہ آدمی ہے جو کرپشن کی وجہ سے جیل میں ہے ۔تقریریں کرنے سے مسئلہ کشمیر حل نہیں ہوتا، مسئلہ کشمیر حساس نوعیت کا مسئلہ ہے اسے اس کی نوعیت کے مطابق حل کرنا ہے۔مہاجرین مقبوضہ کشمیر،کے حوالے سے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ پرانی حکومتوں نے مہاجرین کے مسائل پر توجہ نہیں دی ہم مہاجرین کے لیے بہتر سوچ رہیں ہیں اور مہاجرین کا ایڈجسٹ کریں گے ۔

وزیر امور کشمیر کا مزید کہنا تھا کہ بھارت بار بار لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کررہا ہے، ہم نے بھارت کو اپنا احتجاج ریکارڈ کروایا ہے، بھارت سے فرنٹ ٹو فرنٹ بات کریں گے کہ ظلم بند کرے۔گلگت کے حوالے سے انہوں نے کہاجی بی آرڈر میں کافی پیچیدگیاں تھیں، گلگت بلتستان کو حقوقِ دلانے کیلئے کابینہ کی کمیٹی بنائی گئی، ہم کشمیر کاز کو متاثر نہیں ہونے دیں گے، گلگت بلتستان کیلئے آئینی پیکج آخری مراحل میں ہے، گلگت بلتستان کے لوگوں کو 70 سال بعد حقوق ملیں گے، کشمیر پر اقوام متحدہ کی رپورٹ ہماری فتح ہے۔اقوام متحدہ کی رپورٹ پر ہم کام کررہے ہیں ،دنیا نے ہمارے موقف کو تسلیم کرنا شروع کردیا ہے،کشمیر کاز پاکستان کی ترجیع میں ہے۔

کشمیر کمیٹی کے چیئرمین کے سوال پر علی امین گنڈاپور نے ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ مولانا فضل الرحمان جیسے جاہل آدمی کو جب یہاں لگا کرآپ یہ امید رکھیں گے کہ سارے مسئلے حل ہوں گے تو یہ آپ کی بھول یے۔وزیر امور کشمیر کا مذید کہنا تھا کہنیلم جہلم پراجیکٹ سے مظفرآباد میں پانی کا مسئلہ پیدا ہوا ،پانچ ارب روپے واپڈا کو مظفرآباد کے لیے جاری کر دیے ہیں ،جلد یہ مسئلہ بھی حل کر لیا جائے گا۔

انہوں نے کہا آزاد کشمیر کے 2016 کے الیکشن میں کونسل فنڈز کے استعمال پر تحقیقات کررہے ہیں،آزاد کشمیر کے انتخابات میں کشمیر کونسل کل 4 ارب روپے کا فنڈ استعمال کیا گیا،نواز شریف صاحب نے کونسل کو خط لکھا کہ کشمیر کے الیکشن میں استعمال کریں،نوازشریف کے خط پر آزادکشمیر الیکشن کیلئے دو ارب جاری کیے گئے،یہ پیسہ براہ راست ٹرانسفر کیا گیا اس کا ٹینڈر نہیں ہوا، دو ارب کے فنڈز مسلم لیگ ن کے امیدواروں کو الیکشن لڑنے کیلئے دیے گئے، جب میں نے تحقیقات شروع کیں تو چیخیں نکلنا شروع ہو گئیں۔