موبائل فون کتنی بار استعمال ہوا، بتانے کیلئے ایپس آ گئیں

اسلام آباد(نیو زڈیسک) سکرین ٹائم اور ڈیجیٹل ویل بیئنگ نامی ایپس سے یہ پتہ چل سکتا ہے کہ دن میں کتنی بار اپنے موبائل فون کا استعمال کیا گیا ہے۔ البتہ بہت سے صارفین اس سہولت سے فیض یاب نہیں ہو سکتے کیونکہ یہ اس آپریٹنگ سسٹم کا حصہ ہے جو فی الحال چند ہی سمارٹ موبائل فونز میں متعارف کرایا گیا ہے۔ایک صارف خاتون کا کہنا ہے کہ پہلی بارڈیجیٹل ویل بینگ نامی ایپ کو استعمال کر کے مجھے معلوم ہوا کہ میں نے اپنا موبائل فون 200 بار ان لاک کیا اور تین گھنٹے سے زائد کا وقت فون استعمال کرنے میں گزارا۔

ایسا میں نے نوکری کے دوران لمبی شفٹ پر کام کرنے اور ایک ماں ہونے کا فرض نبھانے کے ساتھ ساتھ کیا۔ مجھے یقین ہے کہ میں نے صرف وٹس ایپ پر ہنسی مذاق والی پوسٹیں پڑھ کر اور انسٹاگرام پر بلیاں دیکھ کر نہیں گزارا، لیکن یہ نتائج دیکھ کر میں کافی خوفزدہ ہو گئی جس سے کوئی بھی پول کھل سکتاہے۔اس خاتون نے مشورہ دیاکہ لوگ اس کے نتائج سوچنے کے بجائے اس ایپ کا استعمال کرتے ہوئے اپنی عادات پر قابو پاناسیکھیں