کراچی کنگزنےپی ایس ایل 4میں بادشاہت کی جنگ جیتنے کیلئے میدان سنبھال لیا،خصوصی رپورٹ

رپورٹ :وسیم عباس
اسلام آباد:سٹیٹ ویوز

پاکستان سپرلیگ 4 کیلئے تمام ٹیموں نے یواے ای میں ڈیرے جمالئے ہیں صحراکوفتح کرنے کاخواب لئے ہرفرنچائز اپنی سوفیصدکارکردگی دکھانے کوتیارہیں ایسے میں کراچی کنگزنے بھی رواں سال اپنی تیاریاں تیزکردی ہے اوراس بار نسبتاًمضبوط اسکواڈکیساتھ میدان میں اترنے کافیصلہ کیا،کراچی کنگزکے مالک سلمان اقبال،سی ای اوطارق وصی جبکہ سوئنگ کے سلطان وسیم اکرم کراچی کنگزکے صدرہیں۔

کراچی کنگزکوسب سے بڑادھچکاپی ایس ایل ڈرافٹنگ سے قبل لگا جب شاہدخان آفریدی نے فرنچائز کوالوداع کہہ دیا۔کراچی کنگزکی کپتانی کا ذمہ ایک بارپھرعمادوسیم کوسونپا گیا ہے اوران کی خواہش ہوگی کہ نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں ہونیوالے فائنل میں کنگزکی ٹیم ضرور جلوہ گرہو۔اس رپورٹ میں ہم بات کرینگے ہیں کراچی کنگزکی طاقت اورکمزوریوں کی۔

اوپنرز:
کراچی کنگز کے پاس اوپننگ پوزیشن کیلئے کافی مضبوط امیدوارہیں جن میں ٹی ٹوئنٹی کے حکمران بابراعظم،جارح مزاج کولن منرواوراویس ضیاء شامل ہیں۔

مڈل آرڈبیٹنگ:
مڈل آرڈرمیں انگلینڈکے روی بوپارا،جنوبی افریقہ کے کولن انگرام ،زمبابوے کے سکندررضااورمحمدرضوان اورافتخاراحمد ٹیم کو سہارادینے کیلئے موجود ہونگے۔

آل راؤنڈرز:
آل راؤنڈرزکے حوالے سے کراچی کنگزکیلئے تھوڑی سی مشکلات پیداہوسکتی ہیں کیونکہ عمادوسیم کے علاوہ باقی آل راؤنڈرزروی بوپارہ،عامریامین ،لیام لونگ سٹون اوربین ڈنک گزشتہ عرصے میں اپنے دھاک جمانے میں ناکام رہے ہیں ۔اس لئے انہیں ردھم میں آنے میں وقت لگ سکتا ہے ایسے میں کپتانی کیساتھ عمادوسیم پربطورآل راؤنڈربہترکارکردگی دکھانے کیلئے بھی کافی پریشرہوگا۔

بولنگ:
بولنگ کے شعبہ میں کراچی کنگز کے پاس محمد عامر،عثمان شنواری ،آرون سمرزاورسہیل خان جیسے مہلک ہتھیارہیں ،جبکہ عمادوسیم کی اوپننگ اسپیل بھی ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں اپنا ایک مقام رکھتی ہیں ایسے میں پانچویں باؤلرکیلئے روی بوپارہ ،عامر یامین،کولن منرو کے آپشنز موجود ہیں۔ متحدہ عرب امارات کی گرمی میں محمدعامر اورعثمان شنواری پر دباؤزیادہ ہوگا کیونکہ انہیں خودکوانجری سے بھی محفوظ رکھنا ہے ایسے میں جب ورلڈ کپ سرپرآن پہنچاہے۔

کوچنگ سٹاف:
قومی ٹیم کے ہیڈکوچ مکی آرتھر فرنچائز کے بھی ہیڈکوچ ہیں جبکہ راشدٹیم ڈائریکٹراورمشیرکے طور پر فرنچائزکیساتھ منسلک ہیں۔