جموں کشمیرلبریشن فرنٹ سندھ زون کا مقبول بٹ شہید کو زبردست خراج عقیدت

کراچی(سٹیٹ ویوز) جموں کشمیر لبریشن فرنٹ و اسٹوڈنٹس لبریشن فرنٹ سندھ (ڈویژن) اور جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی سندھ زون و جموں کشمیر نیشنل اسٹوڈنٹس فیڈریشن کراچی برانچ کے زیر اہتمام محمد مقبول بٹ ؒ شہید اور شہداٗ چکوٹھی کا یوم شہادت عقیدت و احترام سے منایا گیا۔

اس سلسلے میں شہر کے مختلف علاقوں سے عوام کراچی پریس کلب پہنچی جہاں سے ایک ریلی نکالی گئی شرکاٗ ریلی نے کشمیر کی آزادی کے حق میں نعرے بازی کی اور کشمیریوں پر ہونے والے ظُلم و ستم کی بھرپور مزمت کی.اس کے بعد مقامی آڈیٹوریم میں ایک تقریب ہوئی جس کی صدرارت جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی سندھ زون کے صدر سردار زرین ایڈوکیٹ نے کی اور اسٹیج سیکرٹری کے فرائض جموں کشمیر لبریشن فرنٹ سندھ (ڈویژن) کے جنرل سیکرٹری وحید حیات نے سر انجام دیے تقریب کے مہمان خصوصی جموں کشمیر لبریشن فرنٹ سپریم کونسل کے ممبر سردار جاوید حنیف تھے۔

مقررین نے زبردست الفاظ میں شہیدا کو خراج عقیدت پیش کی اور کہا کہ مقبول بٹ ایک نظریہ ، ایک سوچ بن کر کشمیری عوام کے دلوں اور ذہنون میں سراہیت کر چُکا ہے سامراجی قوتوں کا کوئی بھی حربہ اس کو لوگوں کے دلوں سے نہیں نکال سکتا۔ مقبول بٹ آزادی کی علامت ہیں اوراُن کی جدوجہد ہمارے لئے مشعل راہ ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کی طرف سے بہیمانہ قتل غارت ، نہتے عوام پر پیلٹ گن کے وحشیانہ استعمال اور بنیادی انسانی حقوق کی پاما لی کی شدید مزمت کی گئی۔ طاقت کے اندھے استعمال سے کشمیریوں کو بھارت کے ساتھ رہنے پر مجبور نہیں کیا جا سکتا۔ کشمیر کی نوجوان نسل ظُلم و تشدد کے سائے میں پروان چڑھی ہے، بھارت سے شدید نفرت کرتی ہے اور آزادی سے کم کسی بات پر راضی نہیں ہو گی۔

مقررین نے آزاد کشمیر کے وسائل کی لوٹ مار خاص کر دریاوٗں کا رُخ موڑنے اور اس سے پیدا ہونے والے ماحولیاتی مسائل سے بے اعتناعی برتنے پر شدید تنقید کی۔ ایسے پراجیکٹس سے پہلے حکومت آزاد کشمیر سے معاہدے کئے جائیں۔ دریاؤں کو بہنے دیا جائے اور ریاستی باشندوں کا جینا دوبھر نہ کیا جائے۔ مقررین نے گلگت بلتستان کو آرڈر کے تحت چلانے کی کوشش کی مزمت کی اور مطالبہ کیا کہ گلگت بلتستان میں اسٹیٹ سیبجکٹ رول فی الفور بحال کیا جائے۔ فورتھ شیڈول کا خاتمہ کیا جائے. تقریب سے سردار زرین ایڈوکیٹ، سردار جاوید حنیف، کے ایم عبداللہ ایڈوکیت، سردار عزیر ایڈوکیٹ، سردار راشد عظیم، اسد خان، ڈاکٹر تنویر، سردار ارباب ایڈوکیٹ، عبدالقادر فیروزی، ہمایوں مظفر، ہمدان مظفر، احسن کشمیری، سفیر یونس، عامر عارف اور دیگر نے خطاب کیا ۔