انسداددہشتگردی کی عدالت نے وزیراطلاعات کے وارنٹ گرفتاری جاری کردئیے

اسلام آباد(سٹیٹ ویوز) انسداد دہشتگردی عدالت نے پی ٹی وی پارلیمنٹ حملہ کیس میں مسلسل عدم حاضری پر خیبرپختونخوا کے وزیراطلاعات شوکت یوسفزئی کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیے۔

عدالت نے شوکت یوسفزئی کو گرفتار کر کے پیش کرنے کا حکم دیا جب کہ تحریک انصاف کے 26 کارکنوں کے بھی ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے گئے ہیں۔

عدالت نے شاہ محمود قریشی، جہانگیر ترین، اسد عمر اور شفقت محمود کی جانب سے حاضری سے استثنیٰ کی درخواست دی گئی جسے عدالت نے منظور کرلیا۔

صدر عارف علوی اور وزیراعظم عمران خان کی بریت کی درخواستوں پر آئندہ سماعت پر بحث ہوگی۔

عدالت نے پی ٹی وی پارلیمنٹ حملہ کیس کی سماعت 28 مارچ تک ملتوی کردی۔

پی ٹی وی پارلیمنٹ حملہ کیس کا پس منظر:

نواز حکومت کے خلاف 2014 میں تحریک انصاف کی جانب سے اسلام آباد میں 126 روز کا دھرنا دیا گیا جس میں اسے پاکستان عوامی تحریک کا ساتھ بھی حاصل تھا۔

دونوں جماعت کے کارکنان نے اسلام آباد میں دھرنے کے دوران ہنگامہ آرائی کی اور پی ٹی وی اور پارلیمنٹ پر دھاوا بھی بولا۔

ریڈزون میں ہنگامہ آرائی پر مقدمہ درج کیا گیا جس میں موجودہ وزیراعظم عمران خان، نومنتخب صدر مملکت عارف علوی، وزیر خزانہ اسد عمر، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور دیگر نامزد ہیں۔

عمران خان مقدمے سے دہشت گردی کی دفعات نکالنے اور مقدمہ سیشن کورٹ منتقل کرنے کی درخواست کرچکے ہیں جسے انسداد دہشت گردی عدالت کی جانب سے مسترد کیا جاچکا ہے۔