بارشوں سے تباہی: بلوچستان اورخیبرپختونخوا میں ریکارڈ ٹوٹ گیا،ایمرجنسی نافذ

کوئٹہ،(سٹیٹ ویوز)بلوچستان میں موسلادھار بارشوں سے طغیانی کے سبب کئی علاقے زیر آب آگئے ہیں۔ قلعہ عبداللہ میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے اور کوئٹہ چمن شاہراہ ہر قسم کی ٹریفک کے لیے بند ہے۔زیارت میں 3 فٹ تک برف پڑنے سے دیہاتوں کا شہر سے رابطہ منقطع ہوگیا ہے، تربت سے بلیدہ کا زمینی رابطہ بھی منقطع ہوچکا ہے۔

بلوچستان میں سیلاب کی تباہ کاریاں روکنے کیلئے امدادی سرگرمیاں جاری ہیں اور متاثرین میں خیمے بھی تقسیم کیے جائے رہے ہیں۔

گزشتہ چمن میں شدید برسات اور تیز ہوائیں چلنے سے متعدد مکانوں کی چھتیں گر گئی ہیں۔ چھتیں گرنے سے 2 بچیاں جاں بحق اور 5 افراد زخمی ہوگئے تھے۔

چمن میں ہونے والی موسلادھار بارش کے بعد بجلی اور انٹرنیٹ سروس معطل ہوگئی ہے۔ ندی نالوں میں طغیانی سے نشیبی علاقے زیر آب آگئے ہیں۔

لیویز حکام نے بھی اطلاع دی تھی کہ گلدارہ باغیچہ کے علاقے میں کمرے کی چھت گرنے سے 6 افراد ملبے تلے دب گئے۔ ملبے سے ایک بچی کی لاش نکال لی گئی ہے اور 5 افراد زخمی ہیں۔ زخمیوں میں باپ بیٹا بھی شامل ہیں اور انہیں ڈی ایچ کیو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ بارشیں برسانے والا سسٹم سوموار تک ملک کے بیشتر علاقوں پر موجود رہے گا۔صوبائی ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی(پی ڈی ایم اے) کا کہنا ہے کہ خیبرپختونخوا میں شدید بارشوں کے سبب پیش آنے والے حادثات سے 8 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

ڈی جی پی ڈیم ایم پرویز خان نے بتایا ہے کہ زخمی ہونےوالوں میں 6 کا تعلق کوہاٹ جبکہ دو کا تعلق اپر دیر اور ٹانک سے ہے۔تین دن کی مسلسل بارش کے سبب شمالی وزیرستان کے علاقہ شواہ میں بھی مکان کی چھت گرنے سے خاتون سمیت دو افراد جاں بحق اور ایک زخمی ہو گیا ہے۔ جاں بحق افراد میں ایک بچہ اور اور خاتون شامل ہیں۔

بلوچستان کی تحصیل دکی میں بھی شدید بارش کے باعث ٹی وی بوسٹر محلے میں کمرے کی چھت گرنے سے ایک بچہ شدید زخمی ہوگیا ہے۔پی ڈی ایم اے حکام کا کہنا ہے کہ برفباری کے باعث چترال بونیر اور ایبٹ آباد کے راستے کھولنے پر کام جاری ہے، عوام کسی بھی ناخوشگوار واقعے کی صورت میں ہیلپ لائن 1700 پراطلاع دیں۔

محکمہ موسمیات نے شدید بارشوں کے سبب مالاکنڈ، ہزارہ، گلگت بلتستان اور کشمیر میں لینڈ سلائیڈ کا خدشہ بھی ظاہر کیا ہے۔چھت گرنے کے باعث ایک ہی خاندان کے تین افراد ملبے تلے دب گئے تھے جن میں سے 2 کو بحفاظت نکال لیا گیا ہے جب کہ ایک بچے کو سر پر گہری چوٹیں لگی ہیں۔