صدرآزادکشمیرلائن آف کنٹرول پربھارتی جارحیت کےمتاثرین کےدرمیان پہنچ گئے

چکوٹھی (سٹیٹ ویوز) آزاد جموں وکشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے چکوٹھی سیکٹر میں لائن آف کنٹرول کا دورہ کیا اور بھارتی گولہ باری سے متاثرہ لوگوں سے ملاقات کر کے ان کے مسائل سے آگاہی حاصل کی۔

چکوٹھی پہنچنے پر پانڈو اور کھلانہ سے تعلق رکھنے والے متاثرین سے گفتگو کرتے ہوئے صدر آزادکشمیر نے کہا کہ چکوٹھی اور پانڈو کے عوام نے حالیہ پاک بھارت کشیدگی اور بھارتی جارحیت کے دوران جس مثالی نظم و ضبط ، جرات اور استقامت کا مظاہرہ کیا اس پر وہ مبارکباد کے مستحق ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لائن آف کنٹرول کے ساتھ بسنے والے بہادر عوام کے تعاون سے پاک فوج نے دشمن کے بزدلانہ حملے اورناپاک عزائم کو خاک میں ملا دیا اور نہایت موثر انداز میں علاقے کا دفاع کر کے پوری قوم کا سر فخر سے بلند کر دیا۔

انہوں نے کہا کہ آزادکشمیر کی حکومت نے تمام ماتحت اداروں اور متاثرہ اضلاع کی انتظامیہ کو ہدایت کی ہے کہ وہ بھارتی فوج کی فائرنگ سے متاثر ہونے والے شہریوں کی بحالی اور ریلیف کے لئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کریں اور اس سلسلے میں کسی غفلت یا کوتاہی کا مظاہرہ نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ ملکی سرحدوں کے دفاع کے لئے حکومت اور تمام سرکاری محکمہ جات پاک فوج کی پشت پر ہیں۔

صدرآزادکشمیر نے کہا کہ پاکستان کی بہادر افواج نے مثالی جرات اور پیشہ وارانہ مہارت سے دشمن کا حملہ ناکام بنا کر بھارت اور دنیا کو یہ پیغام دیا ہے کہ پاکستان ایک امن پسند ملک ہے لیکن اپنے دفاع سے غافل نہیں ہے۔ چکوٹھی کو آزادجموں وکشمیر کی پہلی دفاعی لائن قرار دیتے ہوئے صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ کھلانہ کی عوام نے شدید بھارتی گولہ باری کے باوجود نقل مکانی کرنے سے انکار کر کے ایک مثال قائم کی ہے جس کو حکومت اور افواج پاکستان قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہیں۔ انہوں نے متاثرین سے اپیل کی کہ اگر حکومت حفاظتی نقطہ نظر سے انہیں اپنے گھروں سے نکال کر محفوظ مقامات پر منتقل کرے تو وہ حکومت اور انتظامیہ کے ساتھ تعاون کریں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت آزادکشمیر اور افواج پاکستان بھارتی فائرنگ کی زد میں آنے والے شہریوں کو گھروں کے قریب پختہ بنکر بنا کر دینے کے ساتھ ساتھ انہیں صحت کارڈ اور بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے تحت مالی امداد مہیا کرے گی۔ قبل ازیں صدر آزادکشمیر کو بریفنگ دیتے ہوئے پاک آرمی کے کمانڈر اور ڈپٹی کمشنر ہٹیاں بالا نے بتایا کہ کھلانہ اور پانڈو یونین کونسلز کی 35ہزار آبادی میں سے صرف چند سو خاندان ہجرت کر کے محفوظ مقامات پر منتقل ہوئے جن کو عارضی کیمپوں میں رہائش اور خوراک کی تمام سہولتیں مہیا کی جارہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ چکوٹھی سیکٹر کے تمام دیہات میں رابطہ سڑکوں کی بحالی ، ہسپتالوں میں ڈاکٹروں اور ادویات کی دستیابی اور سکول کے بچوں کی حفاظت کے لئے تمام ممکنہ اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔ بعد ازاں صدر سردار مسعود خان نے ہٹیاں بالا میں آزادجموں وکشمیر یونیورسٹی کے علاقائی کیمپس میں قائم بھارتی فوج کی گولہ باری سے متاثر ہونے والوں کے کیمپ کا تفصیلی دورہ بھی کیا۔ انہوں نے متاثرین سے ملاقاتیں کیں اور انہیں مہیا کی جانے والی سہولتوں سے آگاہی حاصل کی۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر ہٹیاں بالا ، سپرنٹنڈنٹ پولیس ہٹیاں بالااور ضلعی انتظامیہ کے دیگر آفیسران بھی موجود تھے۔

صدر آزادکشمیر نے بھارتی فوج کی فائرنگ کی وجہ سے متاثر ہونے والوں کے لئے قائم کئے گے میڈیکل سنٹر کا بھی معائنہ کیا۔ دورہ چکوٹھی کے دوران صدر سردار مسعود خان نے ہٹیاں بالا میں آزاد جموں و کشمیر یونیورسٹی کے علاقائی کیمپس میں قائم امدادی کیمپ میں متاثرین اور میڈیا کے نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے صدر آزاد کشمیر نے کہا کہ آزاد کشمیر کے بہادر عوام لائن آف کنٹرول کی دوسری جانب اپنے بھائیوں کی جدوجہد کی حمایت جاری رکھیں گے اور بھارت کا کوئی حربہ انہیں اس حمایت سے بازنہیں رکھ سکتا ۔