افغان فوج کا نیٹو افواج پر حملہ ، جوابی حملے میں کئی افغان فوجی ہلاک

کابل (سٹیٹ ویوز) افغان طالبان کیساتھ مذاکرات کامیاب ہونے کی خبروں کے بعد بھارتی کی آلہ کار افغان فوج نے امریکی فوج کیساتھ ہی جنگ چھیڑ دی۔

افغان فوج کی جانب سے امریکی اور اتحادی فوج کے قافلے پر حملہ، جوابی فضائی حملے میں متعدد افغان فوجی ہلاک۔ تفصیلات کے مطابق افغانستان میں افغان فوج اپنی ہی اتحادی امریکی فوج کیخلاف لڑائی چھیڑ بیٹھی ہے۔

افغان طالبان کیساتھ امریکا کے کامیاب مذاکرات ہونے کی خبروں کے بعد بھارت کی آلہ کار افغان فوج کو اپنا مستقبل تاریک نظر آ رہا ہے۔ اسی لئے افغان فوج نے اپنا غصہ اپنی اتحادی فوج امریکی پر نکالنا شروع کر دیا ہے۔ تاہم امریکی جانب سے بھی افغان فوج کو اس کی اوقات یاد دلاتے ہوئے بھرپور جواب دیا گیا ہے۔

امریکی میڈیا کے مطابق افغانستان میں ایک مقام پر افغان فوج کی جانب سے امریکی اور اس کی اتحادی فوج کے قافلے پر حملہ کیا گیا۔

اس حملے کے فوری بعد امریکی فوج کے قافلے نے امریکی فضائیہ سے مدد طلب کی۔ امریکی فضائیہ نے بروقت کاروائی کرتے ہوئے افغان فوج کی چیک پوسٹ پر شدید گولہ باری کی۔

اس کاروائی کے دوران کوئی امریکی فوجی تو ہلاک نہیں ہوا، تاہم 7 افغان فوجیوں کی ہلاکت اور 9 کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ دوسری جانب قطر میں افغان طالبان اور امریکا کے درمیان مذاکرات کا پانچواں دور ختم ہوگیا جس میں فریقین کے درمیان دو نکات پر اتفاق ہوگیا۔

دوسری جانب طالبان کے ترجمان نے کہاہے کہ دونوں فریقین اب اپنی اپنی قیادت کو آگاہ کر کے آئندہ ملاقات کی تیاری کریں گے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق دوحہ میں افغان طالبان کی جانب سے مختص کردہ نمائندگان اور امریکا کے نمائندہ خصوصی برائے افغان مفاہمتی عمل زلمے خلیل زاد کے درمیان مذاکرات کا پانچواں دور ہوا۔

فریقین نے طویل مذاکرات کے بعد افغانستان سے غیر ملکی افواج کے انخلا اور انسداد دہشت گردی کے دو نکات پر اتفاق کرلیا۔

امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد کا کہنا تھا کہ دوحہ میں طالبان کے ساتھ مذاکرات کا دور مکمل ہوا، امن کے لیے شرائط میں بہتری آئی ہے اور اب واضح ہے کہ فریقین جنگ کا خاتمہ چاہتے ہیں۔

سفارتی ذرائع کے مطابق مسودے پر فریقین کی جانب سے دستخط موجود نہیں ہیں۔دوسری جانب طالبان کے ترجمان نے کہاکہ دونوں فریقین اب اپنی اپنی قیادت کو آگاہ کر کے آئندہ ملاقات کی تیاری کریں گے۔

یاد رہے کہ افغان طالبان اور امریکی حکام کے درمیان ہونے والے مذاکرات سے اب تک افغان حکومت کو دور رکھا گیا ہے کیوں کہ افغان طالبان اپنی حکومت سے بات کرنے پر آمادہ نہیں ہیں۔تاہم امریکی حکام کا کہنا تھا کہ حتمی معاہدہ ہونے کے بعد طالبان کو افغان حکومت سے بات کرنی ہوگی اور باضابطہ طور پر جنگ بندی کا اعلان کرنا ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں