excise department

محکمہ ایکسائز لاہور عام شہری پر مہربان کئی ہزار گاڑیوں‌کا مالک بنا دیا

لاہور (نیوزڈیسک) : محکمہ ایکسائز لاہور نے ایک ہی شخص کے نام پر 34 ہزار 770 گاڑیاں رجسٹر کر دیں۔ تفصیلات کے مطابق مقامی رہائشی مجاہد شبیر نے لاہور ہائیکورٹ میں پٹیشن دائر کی جس میں کہا گیا کہ پولیس آئے روز گھر پر چھاپے مار کر مجھے ہراساں کررہی ہے ۔میں صرف ایک گاڑی کا مالک ہوں تاہم پولیس یہ الزام لگا کر روزانہ گھر پرچھاپے ماررہی ہے کہ میرے نام پوری 34 ہزار 770 گاڑیاں رجسٹر ہیں۔

ماجد کا کہنا تھا کہ چوری شدہ گاڑیاں بھی میرے نام پررجسٹر کر دی گئی ہیں۔ اس حوالے سے محکمہ ایکسائزاینڈ ٹیکسیشن نے عدالت کو آگاہ کیا کہ تکنیکی خرابی سے گاڑیاں ایک ہی شخص کے نام درج ہوگئیں۔ ڈائریکٹر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کا کہنا تھا کہ ڈیٹا اپ ڈیٹ کردیا گیا ہے، اب درخواست گزار کو شکایت نہیں ہوگی۔ عدالت نے پولیس شہری مجاہد شبیر کو ہراساں کرنے سے باز رہنے کا حکم دیا ۔

جس کے بعد لاہورہائیکورٹ کے جسٹس امیربھٹی نے فریقین کا مؤقف سنے کے بعد درخواست نمٹا دی۔ یاد رہے کہ محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن نے بھی محکمے میں جدت لانے کے لیے کئی اقدامات کیے۔ پنجاب میں رواں برس ہی گاڑیوں کی آن لائن رجسٹریشن کا سسٹم متعارف کروایا گیا تھا۔ سالانہ ٹوکن ٹیکس کی ادائیگی کے لیے بھی آن لائن سہولت متعارف کروانے کا اعلان کیا گیا تھا۔

جبکہ گاڑی کی رجسٹریشن کے لیے فارم آن لائن حاصل کیا جا سکتا ہے۔ پنجاب میں گاڑیوں کی رجسٹریشن بُک ختم کرکے محکمہ ایکسائز پنجاب نے اسمارٹ کارڈز بھی متعارف کروائے تھے۔ محکمہ ایکسائز کے اس فیصلے کے تحت موٹر سائیکل اور گاڑی کے کارڈ کی یکساں فیس مقرر کی گئی جس کے تحت پنجاب کے شہری محض 530 روپے میں اپنی گاڑی یا موٹرسائیکل کے لیے سمارٹ کارڈ کی سہولت سے مستفید ہوئے۔

یہ سہولت صرف نئی گاڑیوں یا موٹرسائیکل خریدنے والے شہریوں کے لیے ہی نہیں تھی بلکہ شہریوں کی گاڑیوں اور موٹرسائیکلوں کی پرانی رجسٹریشن بک بھی سمارٹ کارڈ میں تبدیل کرنے کی سہولت موجود تھی۔
مزید پڑھیں

وزیر خزانہ اسد عمر کا عثمان خواجہ کے حوالے سئ ٹویٹ

اپنا تبصرہ بھیجیں