بلوچستان میں موسلا دھاربارشیں، زیارت میں غیرمتوقع برف باری

کوئٹہ(سٹیٹ ویوز) پاکستان کا سب سے پسماندہ صوبہ بلوچستان ان دنوں ایران کی جانب سے داخل ہونے والے غیر متوقع سسٹم کے سبب بارشوں کی لپیٹ میں ہے، جبکہ زیارت میں برف باری بھی ہوگئی ہے، حادثات میں جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 9 ہوگئی۔

تفصیلات کے مطابق کوئٹہ سے 124 کلو میٹر کے فاصلے پر واقع زیارت میں آج برف باری ہوئی ہے، سطح سمندر سے 2،543 میٹر بلندی پر واقعہ سیاحتی مقام پر برف باری معمول سے ہٹ کرہے۔زیارت میں برف باری کا سیزن عموماً اکتوبر کے اواخر یا نومبر سے شروع ہوتا ہے اور فروری کے اختتام تک جاری رہتا ہے

اس مرتبہ یہ سیزن مارچ تک رہا اور اس کے چند ہی دن بعد ایک بار پھر برف باری کا ہونا غیر معمولی ہے، اس غیر متوقع برف باری کے سبب زیارت اور کوئٹہ میں موسم سرما طویل ہوگیا ہے جس سے فصلوں کو بھی نقصان پہنچنے کا شدید اندیشہ ہے۔

کوئٹہ شہر میں گزشتہ چار روز سے بارشوں کو سلسلہ جاری ہے ،گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران بلوچستان میں بارش کی صورتحال‬ کچھ اس طرح ریکارڈ کی گئی ہے۔ کوئٹہ اور ژوب میں 37،جیونی 26،پسنی میں 19 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

محکمہ موسمیات کے مطابق ‬‫گوادر میں 13،سبی میں 11 ملی میٹر بارش رکارڈ،‫اورماڑہ میں 5، قلات 4،خضدار 3، اور نوکنڈی میں 2 ملی میٹربارش ریکارڈ کی گئی ہے۔
ڈائریکٹرمحکمہ موسمیات کا کہنا ہے ایران میں بننےوالابارش کانظام فی الحال بلوچستان ،پنچاب اور کے پی میں موجود ہے، بارش کانظام کراچی سمیت پورے سندھ سے نکل چکاہے۔

تاحال کوئٹہ، چمن سمیت شمالی بلوچستان میں بارش کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری ہے، جبکہ شمال مشرقی بلوچستان کے بیشتر علاقوں میں سیلابی ریلے آنے سے رابطہ سڑکوں کو شدید نقصان پہنچا ہے۔

بلوچستان کے مختلف شہروں میں طوفانی بارشوں اور سیلاب نےتباہی مچادی ۔ مکانات گرگئے جبکہ رابطہ سڑکیں متاثر ہوئی ہیں، کئی علاقےزیرآب آگئے۔ بلوچستان میں حالیہ بارش سے ہلاکتوں کی تعداد نو ہوگئی ہے ۔

کوئٹہ ،مستونگ، قلات،بولان،زیارت اور چمن میں بارش کاسلسلہ جاری ہے ۔بولان میں سیلابی ریلے سےبلوچستان سندھ شاہراہ پرٹریفک معطل چمن میں سڑکیں تباہ ہوگئیں ۔دکی کےکئی علاقے زیر آب آگئے۔ مکان کی چھت گرنے سے خاتون زخمی ہوگئیں۔کوہلومیں موسلادھار بارش کے سبب اب تک کئی کچےمکانات منہدم ہوچکے ہیں ۔ضلع بھر میں الرٹ جاری کردیاگیا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں