ن لیگی دور میں راہداری معاہدہ سے 14 ارب ڈالر نقصان ہوا، مشیر تجارت

اسلام آباد(سٹیٹ ویوز) مشیر تجارت عبد الرزاق داؤد نے کہا ہے کہ چین سے ن لیگ دور میں ہونے والا معاہدہ غیر متوازن تھا جس سے 14 ارب ڈالر نقصان ہوا۔قومی اسمبلی کے اجلاس میں وقفہ سوالات کے دوران رکن اسمبلی سید حسین طارق نے پوچھا کہ مسلم لیگ ن کے دور میں چین سے ہوئے آزاد تجارتی معاہدے سے پاکستان کو 12ارب ڈالر کا نقصان ہوا۔

ن لیگ کے بعد اب تحریک انصاف کی حکومت چین کو آزدانہ تجارت میں رعایات دینے جارہی ہے، بتایا جائے ہم پاکستان کے لئے کام کررہے ہیں یا چین کے لئے؟۔مشیر تجارت عبد الرزاق داؤد نے جواب دیا کہ چین سے ن لیگ دور میں ہونے والا آزاد تجارت معاہدہ غیر متوازن تھا

جس کی وجہ سے 12 کی بجائے 14ارب ڈالر کا نقصان ہوا، موجودہ حکومت نے چین سے آزاد تجارت کا معاہدہ متوازن کرلیا ہے، اب پاکستان کو آسیان ممالک جیسی سہولیات چین سے حاصل ہوگئی ہیں اور پاکستان کی 313 اشیا کو چین کے لئے ڈیوٹی فری قرار دے دیا گیا ہے۔

عبد الرزاق داؤد نے کہا کہ یکم جولائی سے اب تک درآمدات میں ساڑھے تین ارب ڈالرز کی کمی آئی ہے اور تجارتی خسارا بھی کم ہوگیا ہے، جون تک 5 سے 6 ارب ڈالر تک درآمدات میں کمی ہو جائے گی، اگرچہ اب تک برآمدات نہیں بڑھ سکی ہیں تاہم امید ہے کہ اب برآمدات میں بھی اضافہ ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں