پاکستانیوں سے شادی رچانے والی خواتین کیخلاف بڑی کارروائی کا فیصلہ

ہری پور(بیورورپورٹ)سرکاری غیر سرکاری ملازمین اور تاجروں اور دیگر سے شادی رچانے والی افغان خواتین کے خلاف وفاقی اور صوبائی حکومت کی جانب سے بڑی کارروائی کاامکان ہے۔

مذکورہ افغان خواتین کی پاکستانی سے شادی کے بعد حاصل ہونے والی پاکستانی شہریت منسوخ ہونے کے امکانات،ہزارہ بھر کے تمام اضلاع میں ایسی سینکڑوں خواتےن کی موجودگی کا انکشاف حکومتی اداروں نے کوائف اکٹھا کرنا شروع کر دئیے،کئی مقامی و افغان خاندانوں کے رونگھٹے کھڑے ہوگئے.

ذرائع نے مزید بتایا کہ اس کارروائی میں ان پاکستانی مردحضرات کے خلاف بھی کارروائی ممکن ہے جو غیر ملکی خواتین سے شادیاں کر کے خود ان ممالک کی شہریت حاصل کرتے ہیں اور اپنے بچوں کو بھی ان ممالک کی شہریت دلوانے کا راستہ بناتے ہیں جبکہ دوسری جانب افغان خواتین سے شادیاں رچانے والے مرد اپنی افغان بیویوں اور ان کے بچوں کو غیر قانونی طریقہ سے پاکستانی شہرےت دلواتے ہیں

چونکہ ہزارہ میں افغان مہاجرین کی کثیر تعداد موجود ہے اور کئی مقامی افراد بیرون ملک بھی شادیاں کر بےٹھے ہیںتواس تمام صورتحال کے خلاف حکومتی آپریشن کی زد میں ہزارہ کے بھی بیشتر خاندانوں کے آنے کے خدشات ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں