پیپلزپارٹی دور میں 269ملازمین کی بھرتی غیرقانونی قراردینے کا فیصلہ برقرار

اسلام آباد (سٹیٹ ویوز) اسلام آباد ہائیکورٹ کے ڈویژن بنچ نے پیپلز پارٹی دور حکومت میں پاکستان ایگریکلچر ریسرچ کونسل میں 269 ملازمین کی بھرتی کو غیر قانونی قرار دینے کا عدالتی فیصلہ برقرار رکھتے ہوئے انٹرا کورٹ اپیل خارج کردی ہے ۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے ملازمین کی درخواست مسترد کرتے ہوئے بھرتیوں کو غیر قانونی قرار دیا تھا جس کے بعد ملازمین کی انٹرا کورٹ اپیل کی سماعت جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل ڈویژن بنچ نے کی اور دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔ گزشتہ روز فاضل عدالت نے سنگل بنچ کے فیصلے کو برقرار رکھتے ہوئے ملازمین کی انٹرا کورٹ اپیل خارج کر دی۔

واضح رہے کہ پیپلزپارٹی دور میں خورشیدشاہ کمیٹی نے ملازمین کی بھرتی قانونی قرار دے کر بحال کیا ، ان ملازمین کو2008سے 2010 کے درمیان پی اے آر سی بھرتی کیا گیا تھا ، 23 مئی2011 کو ملازمین کو وزارت فوڈ سیکورٹی نے غیرقانونی قرار دے کر فارغ کر دیا تاہم خورشید شاہ کمیٹی نے 2012میں ملازمین کو بحال کر دیا تھا۔ غیرقانونی بھرتی کیس

اپنا تبصرہ بھیجیں