انور مجید کے ایک اور بیٹے سمیت مزید 3 ملزم گرفتار

کراچی(سٹیٹ ویوز) قومی احتساب بیورو (نیب) نے جعلی اکاؤنٹ کیس میں اومنی گروپ کے سربراہ انور مجید کے ایک اور بیٹے سمیت مزید تین ملزمان کو گرفتار کرلیا۔

نیب نے کراچی میں کارروائی کرتے ہوئے جعلی اکاؤنٹ کیس میں مزید تین ملزمان کو گرفتار کیا ہے جن میں انور مجید کا بیٹا ذوالقرنین مجید، قریبی عزیز خواجہ سلمان یونس اور اومنی گروپ کا پراجیکٹ ڈائریکٹر ملک عبدالوحید شامل ہیں۔

نیب نے جعلی اکاوئنٹس کیس میں گرفتار تینوں ملزمان کو احتساب عدالت کراچی میں پیش کرکے ریمانڈ کی درخواست کی۔ نیب پراسیکیوٹر نے بتایا کہ ملزمان کو رات گئے گرفتار کیا گیا تھا۔

عدالت نے ملزموں کو 4 روزہ راہداری ریمانڈ پر نیب کے حوالے کرکے چار روز کے اندر متعلقہ عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا۔ ذوالقرنین مجید نے نیب پر تشدد کا الزام بھی لگایا جس پر عدالت نے نیب تفتیشی افسر پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ذوالقرنین مجید کا طبی معائنہ کرانے کا حکم دیا۔

ملزمان سے نیب کی کمبائن انوسٹی گیشن ٹیم مشترکہ تحقیقات کریگی اور انہیں راہداری ریمانڈ کے بعد اسلام آباد منتقل کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں آصف زرداری کے قریبی ساتھی اور اومنی گروپ کے مالک انور مجید اور ان کے بیٹے عبدالغنی مجید گرفتار ہیں جبکہ ایک بیٹے نمر مجید ضمانت پر ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں