راجہ مجاہد کاحلقہ چڑہوئی میں عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کا اعلان

اسلام آباد(سٹیٹ ویوز)سابق ممبر اسمبلی راجہ مجاہد نے کہا ہےکہ حلقہ چڑھوئی کے سارے عوام بلاتخصیص علاقہ و قبیلہ میری اولاد اور بھائیوں کی طرح ہیں جن کے حقوق کا تحفظ اور مسائل کا حل میں اپنا فرض سمجھتاہوں ۔یہ والہانہ عقیدت و احترام کے جذبوں سے سرشار لوگ ہیں جن کا میرے ساتھ پیار و محبت کا لازوال رشتہ قائم ہےاور انشاءاللہ قائم ودائم رہے گا۔

عوامی وفود سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حلقے کی تمام یونین کونسلز اوران کے عوام میرے لئے یکساں اہمیت رکھتے ہیں جن کیلئے میں دن رات میری خدمات حاضر ہیں ۔ انہوں نے کالا ڈب کا خصوصی طور پر ذکر کرتے ہوئے کہاکہ کالا ڈب کے عوام کا دکھ درد اور ہر طرح کی تکلیف ومسائل میرا اپنا درد اور مسئلہ ہے اور میری یہ کوشش ہوگی کہ میں تمام یونین کونسلز کے عوام تک پہنچوں اور ان کے مسائل کے حل کیلئے اپنا کردار ادا کر سکوں۔اس کیلئے مجھے جو بھی قیمت ادا کرنی پڑے میں اس کیلئے تیار ہوں۔

انہوں نے کہا کہ میں کسی سے بھی یونین کونسل، علاقے یا سیاسی کارکنان کے ساتھ سیاسی سطح پر ،محکمانہ طور پر یا کسی بھی لحاظ سے کسی قسم کی زیادتی یا نا انصافی برداشت نہیں کر سکتا اور نہ ہی سیاست میں پسند و ناپسند اور من مانیوں کی حمایت کر سکتا ہوں۔ میں بلاتخصیص علاقہ و برادری خدمت پر یقین رکھتا ہوں اور انشاءاللہ حلقے کے عوام کے ساتھ ہر سطح پر اور ہر لمحہ رابطے میں ہوں اور حاضر خدمت بھی۔ میری کسی سے کوئی ناراضگی یا اختلاف نہیں ، سب کو ساتھ لے کر چلوں گا اور ہم سب مل کر چڑھوئی کے انتخابی حلقے سے محرومیوں کا خاتمہ کریں گے۔ انہوں نے مذید کہاکہ میں تمام سیاسی کارکنان کی خدمات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہوں، خاص طور پر اوور سیز سیاسی رہنماؤں کی خدمات ناقابل فراموش ہیں جن کی قربانیوں کو نہ حلقے کے عوام بھول سکتے ہیں اور نہ جماعت اور اس کی قیادت ان کہ خدمات کو فراموش کرے گی۔

راجہ مجاہد نے مذید کہاکہ میں باضابطہ طور پر حلقے کی سطح پر رابطہ عوام مہم کا آغاز کر رہا ہوں ، میری کوشش ہوگی کہ میں ہر علاقے اور اس کے عوام تک پہنچوں اور ان کے مسائل معلوم کر سکوں ۔ میں تمام سیاسی و عوامی کارکنان کیلئے ہر وقت حاضر ہوں ، جس کا بھی جو بھی مسئلہ ہو وہ مجھے بذریعہ موبائل کال یا مسیج آگاہ کر سکتاہے، انشاءاللہ میں ہر ممکن کوشش کروں گا کہ ان مسائل کو حل کرنے کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کر سکوں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں