وزیر اعظم آزادکشمیر نے اپنی بندوق سے بھارتی نشانہ بازو ں کو سبق سکھانے کی ٹھان لی

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر سٹیٹ‌ویوز) شہید کشمیری رہنما برہان ظفر وانی کی تیسری برسی کے حوالے سے منعقدہ سیمینار سے وزیر اعظم آزاد کشمیر راجا فاروق حیدر کاخطاب –

دوران خطاب وزیر اعظم آزادکشمیر کا کہنا تھا کہ کشمیر میں شہادتوں اور مزاحتموں کی تاریخ طویل ہے -کشمیریوں نے جانیں قربان کیں اورآزادی کی تحریک جاری رکھی -مودی کے توسیع پسندانہ عزائم کی راہ میں رکاوٹ کشمیری ہیں- جب کہ دوسری طرف کشمیر کے حوالے سے دنیا کا بھی دہرا معیار ہے وہ ملالہ کا نام لیتی ہے لیکن کشمیر کی چار سالہ آصفہ کو بھول جاتی ہے –

دنیا میں بھارتی بیانیے کا توڑ سفارتی طریقے ہیں-پراکسی وار سے بھارت کو شکست نہیں دی جا سکتی.اس کے لیے آزاد حکومت اور حریت رہنماوں پر مشتمل ایک فورم بنایا جائے اور پھر اس فورم کو او آئی سی میں بطور مبصر نمائندگی دلائی جائے .یہ اس لیے بھی ضروری ہے کہ جب پاک بھارت تنازعات کے حل کیلئے منیجمنٹ کی جاتی ہے کشمیر پیچھے رہ جاتاہے-

اس موقع پر وزیر اعظم آزادکشمیر کا جیو نیوز سے وابستہ صحافی سید شیراز گردیزی سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ انھوں‌ نے ایک عدد رائفل رکھی ہے-
جس سے وہ بھارتی نشانہ بازوں کو ماریں‌گے- یہ الگ بات ہے کہ میں بوڑھا ہو گیا ہوں‌ لیکن ہاتھ پیر پھر بھی نہیں‌کانپتے -زیادہ نہیں‌تو ایک آدھ بھارتی نشانہ باز کو مار ہی سکتا ہوں‌-

اپنا تبصرہ بھیجیں