ہریتھک روشن نے بہن کی محبت پر خاموشی توڑ دی

اسلام آباد(نیوزڈیسک)گزشتہ ماہ جون میں بولی وڈ اداکار ہریتھک روشن کی بہن سنینا روشن نے انکشاف کیا تھا کہ ان کی جانب سے مسلمان شخص سے محبت کرنے پر گھر والوں نے ان کی زندگی جہنم بنادی۔

سنینا روشن نے دعویٰ کیا تھا کہ مسلمان صحافی روحیل امین سے محبت کرنے کی وجہ سے ان کا خاندان ان کا مخالف ہوگیا اور انہیں ڈرایا دھمکایا گیا، جس وجہ سے گھر چھوڑنے پر مجبور ہوئیں۔

سنینا روشن نے والد فلم ساز راکیش روشن پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ انہیں ان کے والد نے مسلمان شخص سے محبت کرنے کے جرم میں تشدد کا نشانہ بنایا اور انہیں کہا کہ وہ جس شخص سے محبت کرتی ہیں وہ دہشت گرد ہے۔

سنینا روشن نے اعتراف کیا کہ انہیں ایک سال قبل ہی مسلمان صحافی روحیل امین سے محبت ہوئی اور پہلی بار ان کا رابطہ فیس بک کے ذریعے ہوا تھا۔

سنینا روشن کے بعد صحافی روحیل امین نے بھی بھارتی میڈیا کو ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ جب خود ہریتھک روشن نے مسلمان لڑکی سے محبت کی تو وہ اپنی بہن کو محبت پر کیوں اعتراض کر رہے ہیں؟

روحیل امین نے حیرانگی کا اظہار کیا تھا کہ ہریتھک روشن نے خود ایک مسلمان لڑکی سوزین خان سے شادی کی اور اب جب ان کی بہن نے ان سے محبت کی تو اسے غلط سمجھا جا رہا ہے۔

روحیل امین کے مطابق ان کی اور سنینا کی دوستی ایک سال قبل ہی سوشل میڈیا کے ذریعے ہوئی اور جو آہستہ آہستہ محبت میں بدل گئی اور انہیں یہ سن کر پہلے تو یقین ہی نہیں آیا کہ سنینا کے خاندان والے ان کی محبت سے ناخوش ہیں۔

روحیل امین نے بتایا تھا کہ جب انہیں سنینا نے بتایا کہ ان کا خاندان ان کی محبت اور دوستی کو مختلف مذہب کی وجہ سے تسلیم نہیں کر رہا تو انہیں ان کی بات پر یقین نہیں آیا، لیکن بعد ازاں انہیں احساس ہوا کہ وہ سچ کہ رہی ہیں۔

اور اب سنینا اور روحیل کی محبت پر پہلی بار ہریتھک روشن نے خاموشی توڑتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ ان کے گھر میں کبھی بھی مذہب کو اہمیت نہیں دی گئی۔

انڈیا ٹوڈے کے مطابق ہندوستان ٹائمز کو دیے گئے انٹرویو میں ہریتھک روشن نے بہن کی محبت کے معاملے پر کھل کر بات کرنے سے معذرت کی اور کہا کہ وہ اس وقت اس معاملے پر بات نہیں کرسکتے۔

ہریتھک روشن نے بہن کی حالت پر بے بسی کا اظہار کرتے ہوئے ان کی جانب سے محبت کے معاملے کو ان کی ذہنی بیماری سے تشبیہ دینے کی کوشش کی اور کہا کہ ہمارے ملک میں طبی سہولیات بہتر نہیں ہیں۔

اداکار نے اپنی بڑی بہن کی محبت کے حوالے سے کہا کہ وہ اس وقت ایسی صورتحال میں نہیں ہیں کہ وہ سنینا کے معاملے پر کھل کر بات کرسکیں۔

تاہم انہوں نے واضح کیا کہ ان کے خاندان میں کبھی بھی مذہب کو فوقیت نہیں دی گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں