امریکہ صدر نے پاکستان کو مسئلہ کشمیر حل کروانے کی پیش کش کردی

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صدر نے پاکستان کو مسئلہ کشمیر حل کروانے کی پیش کش کردی، ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ پاکستان افغان مسئلے کے حل کیلئے امریکا کی زبردست مدد کرتا آیا ہے، امریکا بھی مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے ثالثی کا کردار ادا کرنے کیلئے تیار ہے۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر کے درمیان ون آن ون ملاقات ہوئی ہے۔

ملاقات کے دوران امریکی صدر ٹرمپ نے کہا کہ پاکستان افغان مسئلے کے حل کیلئے امریکا کی زبردست مدد کرتا آیا ہے اور آگے بھی اس معاونت کے جاری رہنے کی امید ہے۔ امریکی صدر نے کہا کہ امریکا بھی مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے ثالثی کا کردار ادا کرنے کیلئے تیار ہے۔ بھارتی وزیراعظم بھی مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے مدد مانگ چکے ہیں۔امریکی صدر نے مزید کہا کہ عمران خان کے ساتھ ملاقات کو انتہائی خوشگوار دیکھ رہا ہوں۔

امید ہے ملاقات کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات میں بہتری آئے گی۔وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر مین مسکراہٹوں کا تبادلہ بھی ہوا۔ ون آن ون ملاقات کے بعد وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر کے درمیان وفود کی سطح پر نشست بھی ہوگی۔ ملاقات میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ بھی شریک ہوں گے۔ ملاقات کے دوران امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ انہیں پوری امید ہے کہ دونوں ممالک کے تعلقات میں بہتری آئے گی۔

پاکستان افغانستان کے مسئلے کے حل کیلئے ہماری بھرپور مدد کر رہا ہے۔ ہم کافی وقت ساتھ گزاریں گے اور پاکستان کے معاملات پر بھی جات ہوگی۔ اگر معاملات حل ہوگئے تو پاکستان کی امداد بحال کر سکتے ہیں۔ اس سے قبل وزیراعظم عمران خان واشنگٹن ڈی سی میں امریکی صدر سے ملاقات کیلئے وائٹ ہاؤس پہنچے۔ وائٹ ہاؤس پہنچنے پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وزیراعظم عمران خان کا استقبال کیااور مصافحہ کیا۔

دونوں ممالک کے سربراہان کے درمیان ملاقاتوں کے دوران بڑے بریک تھرو کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔ جبکہ بتایا جا رہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کے اس دورے کے دوران امریکا پاکستان کو آزادانہ تجارتی معاہدے کی پیش کش بھی کر سکتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں