ڈاکٹروں نے اپینڈکس کے آپریشن کے بجائے بچی کا گردہ نکال دیا

کوئٹہ(سٹیٹ ویوز) ڈاکٹروں نے اپینڈکس کے آپریشن کے نام پرتیرہ سال کی بچی کا گردہ چوری کرلیا،ذمہ دارلیڈی ڈاکٹر نے واقعہ پربات نہیں کی، تاہم صوبائی حکومت نےواقعے کی تحقیقات کے لیے ماہرسرجنز پرمشتمل کمیٹی بنادی ہے۔

تفصیلات کے مطابق کوئٹہ کے ایک نجی میڈیکل کمپلکس میں طبی عملے نے پنجگور کے رہائشی محمد طاہر کی تیرہ سال کی بیٹی کے اپینڈکس آپریشن کے دوران اس کا گردہ ہی نکال لیا ، تاحال اس کا گردہ نکا ل لینے کی وجوہات والدین کو نہیں بتائی گئیں ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کمسن مریضہ کو اپینڈکس کی پرانی سرجری کے نتیجے میں تکلیف کے باعث جناح روڈ پر واقع میڈیکل کمپلییکس لایا جہاں پتے اور اپینڈکیس کی ماہر لیڈی ڈاکٹر نے بچی کے پرانے آپریشن کی صفائی کرنے کا مشورہ دیا۔

اپینڈکس کی صفائی کا آپریشن جب کئی گھنٹے طویل ہوگیا تو بچی کے والد نے اسپتال کے عملے سے اس بارے میں استفسار کیا ۔ جواب میں یہ اطلاع اس پر یہ اطلاع بجلی بن کرگری کہ اس کی بیٹی کو ایک گردے سے ہی محروم کردیا گیا ہے۔

ڈاکٹرز نے معاملے کو رفع کرنے کے لئے بچی کو ہائی ڈوز کی نشہ آور گولیاں بھی تجویز کیں جس سے بچی دو دن تک بے ہوش رہی۔ذمہ دار لیڈی ڈاکٹر سے اے آروائی نیوز نے موقف لینے کی کوشش کی تووہ انکار کرتے ہوئے کلینک چھوڑ کر چلی گئیں ۔صوبائی حکومت نے معاملے کی تحقیقات کے لئے تین ماہر سرجنز پر مشتمل کمیٹی تشکیل دے دی ہے جو اس واقعے کی رپورٹ مرتب کرکے حکومت کو پیش کرے گی ۔

دوسری جانب بچی کے والد سے اب بھی مذکورہ میڈیکل کمپلیکس میں علاج کے چارجز وصول کئے جارہے ہیں۔محمد طاہر کا مطالبہ ہے کہ ان کی متاثرہ بچی کا علاج سرکاری خرچے پر کروایا جائے اور ذمہ دار ڈاکٹرز کے خلاف سخت سے سخت کارروائی عمل میں لائی جائے۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں