راجہ اقبال اورراجہ شفیق کی ملاقات،حلقہ چڑہوئی کے مسائل،کارکنان کے تحفظات پرمشاورت

اسلام آباد(نیوزڈیسک)برطانیہ کے دورے پر آئے سابق امیدوار اسمبلی حلقہ چڑھوئی راجہ اقبال اورمسلم لیگ ن اوورسیز کے چیئرمین و میڈیا ایڈوائزر راجہ شفیق احمد کے درمیان 5 گھنٹوں پر محیط تفصیلی ملاقات ہوئی جس میں حلقہ چڑھوئی سے متعلق تمام مسائل ومعاملات ، لیگی کارکنوں اور اوورسیز رہنماؤں کے مسائل و تحفظات ، ترقیاتی عمل، تقرریوں و تبادلہ جات بارے پالیسی ، بجلی کے نظام اور تمام یونین کونسلز سے متعلق امور زیر بحث آئے۔

راجہ شفیق نے 2016 سے آج تک تمام سیاسی ، جماعتی اور عوامی معاملات و مسائل اور وقتا فوقتا پائے جانے والے تحفظات پر سیر حاصل روشنی ڈالی اور اس بات پر زور دیا کہ تمام حکومتی وسائل کی مساویانہ اور شفاف بنیادوں پر تقسیم یقینی بنائی جانی چاہیئے اور مشکل وقت میں ساتھ دینے والوں کی عزت نفس اور ان کی خواہشات کا خیال رکھا جانا چاہیئے۔ خاص طور پر اوورسیز سیاسی کارکنان جنہوں نے پارٹی اور حلقے کے لئے شبانہ روز محنت کی اور جنہوں نے ساری جدوجہد میں فرنٹ لائن کاکردار ادا کیا ان کے معاملات و مسائل کوبھی ترجیح دی جانی چاہئے ۔

راجہ شفیق نے ماضی کی غلطیوں کے ازالے اور آئندہ معاملات میں مشاورت کا راستہ اختیار کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا اور اس عزم کابھی اظہار کیا کہ وہ جماعت کی مضبوطی اور اس کے ڈسپلن کی پاسداری اور عوامی مسائل کیلئےاپنی توانائیاں بروئے کارلانے کیلئے تیار ہیں ۔ انہوں نے یہ بھی واضح کیا کہ مجھے ذاتی حیثیت میں کسی قسم کاکوئی لالچ یا ضرورت نہیں، ہمارا مقصد عوامی فلاح وبہبود ، کارکنوں کی عزت نفس اور پارٹی کی مضبوطی ہے جس کیلئے ہم ہر سطح پر جانے کیلئے تیار ہیں۔ راجہ شفیق نے کہاکہ جناب وزیراعظم سے ہمارا جو قریبی تعلق ہے اس کو ہم عوامی مسائل کے حل کیلئے کارآمد بنائیں گے اور ہماری کوشش ہوگی کہ وزیراعظم صاحب سے حلقے کیلئے کوئی میگاپراجیکٹس اورخاطر خواہ ترقیاتی فنڈز کا حصول بھی یقینی بنائیں ۔میری سیاست کامرکز ومحور عوامی مسائل کا حل ہے جس کیلئے میں اپنا کردار ادا کرتا رہوں گا۔

انہوں نے کہا کہ میری کسی سے کوئی ذاتی ناراضگی یا مفاد نہیں، میرا مدعا صرف یہ ہے کہ جن لوگوں نے اپنا خون ،پسینہ پارٹی اور الیکشن میں فتح یابی کیلئے وقف کیا، جو انتقامی کارروائیوں کانشانہ بنے اور جو مالی اعتبار سے اور کئی دوسرے حوالوں سے زیربار ہوئے ان کی شکایات کا ازالہ ہوناچاہیئے۔ انشاءاللہ ہماری کوشش ہوگی کہ ماضی کو بھلا کر نئے عزم و حوصلے کے ساتھ باہمی اتفاق و مشاورت سے آگے بڑھیں اور آئندہ انتخابات میں حلقے میں سیاسی تبدیلی کویقینی بنائیں ۔

اس موقع پر راجہ اقبال نے راجہ شفیق کی مخلصانہ تجاویز ، مشوروں اور ان کے نیک نیتی پر مبنی جذبات کو سراہتے ہوئے آئندہ تمام معاملات میں مشاورت اور اتفاق رائے کا عزم ظاہر کیا اور تمام شکایات و تحفظات ختم کرنے کیلئے عملی اقدامات اٹھانے کی یقین دہانی کروائی۔ اس موقع پر سیاسی رہنما راجہ ابرار بھی موجود تھے جنہوں نے دونوں رہنماؤں کی ملاقات بامقصد اور معنی خیز بنانے میں کلیدی کردار ادا کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں