واٹس اپ پردوستی سعودعی عرب سے کراچی آنے والا نوجوان بے دردی سے قتل

کراچی (نیوز ڈیسک )واٹس اپ پردوستی اور محبت کابھیانک انجام- سعودعی عرب سے کراچی آنے والا نوجوان بے دردی سے قتل -گوجرنوالہ کے رہاشی نوجوان کوکراچی میں محبوبہ نے قتل کے بعدلاش کوکچراکنڈی میں جلاڈالا-کریم آبادمیں کچراکنڈی سے عید الفطر کے روز ملنے والی جلی ہوئی لاش کے راز سے پردہ اٹھ گیا-مقتول کی تین ماہ بعد شناخت کرلی گئی-

علی حمزہ کومحبونہ نے عید الفطر سے تین روز قبل سعودی عرب سے کراچی بلایا -لالچی محبوبہ شبانہ نے عیدالفطر کی چاندرات کونیند کی گولیاں کھلاکرعلی حمزہ کے گلے میں پھندالگاکرقتل کیااورلاش کوکچراکنڈی میں پھینکا-قتل کی لرزہ خیزواردات میں متحدہ لندن کاکارندہ اور فلاحی ادارے کابانی بھی ملوث نکلا-لاش کوٹھکانے لگانے کے لیے قاتل محبوبہ کوایبولینس فراہم کی گئی-

لاش عید الفطر کے پہلے روزپھینکی گئی -لاش ایک روز تک کچرے کے ڈھیرمیں پڑی رہی-قاتل محبوبہ کوچین نہ آیا تو ساتھی ملزم خلیل کے ہمراہ دوبارہ کچراکنڈی پہنچی-عید کے دوسرے روز ملزمہ شبانہ نے پیٹرول پمپ سے پیٹرول خریدا اور لاش کوآگ لگائی -ملزمہ شبانہ ساتھی ملزم خلیل کے ہمراہ واردات کے بعدفرار ہوئی

دوماہ تک لاش کی شناخت نہ ہوئی تو قانون نافز کرنے والے ادارے نے تحقیقات کاآغاز کیا -قانون نافذ کرنے والے ادارے نےڈیراہ اسماعیل خان میں چھاپہ مارا ڈیرہ اسماعیل خان میں چھاپے کے بعدتفتیشی پولیس اور قانون نافذکرنے والے ادارے کا ملیرجعفرطیارسوسائٹی میں چھاپہْ -قاتل محبوبہ شبانہ ساتھی ملزم خلیل کے ہمراہ گرفتار

ْقتل کی واردات سے قبل لالچی محبوبہ نے عاشق کے ساتھ سیلفیاں بنوائیں -لاش کی شناخت مقتول کے ایک دانت کی مددسے ہوئی ،لالچی محبوبہ شبانہ کاآبائی تعلق ڈیراہ اسماعیل خان..سے ہے -ملزمہ کاساتھ دینے والے متحدہ لندن کے کارندے خلیل کے فلاحی ادارے کے دفترمیں کھدائی بھی گئی ملزمان سے تحقیقات کاسلسلہ جاری-

اپنا تبصرہ بھیجیں